Pakistn Film Magazine in Urdu/Punjabi


A Tribute To The Legendary Playback Singer Masood Rana

Masood Rana - مسعودرانا Masood Rana sang 1044 songs in 649 films

مسعودرانا اور سیف چغتائی

موسیقار سیف چغتائی
ایک لازوال جنگی ترانے
"میریا ڈھول سپاہیا"
کی وجہ سے ہمیشہ یاد رکھے جائیں گے!
موسیقار سیف چغتائی کے بارے میں اتنا ہی کہہ دینا کافی ہے کہ انھوں نے جنگ ستمبر 1965ء کے دوران ملکہ ترنم نورجہاں سے یہ لافانی جنگی ترانہ گوایا تھا:
    میریا ڈھول سپاہیا ، تینوں رب دیاں رکھاں
    جنہاں راہوں توں آویں ، جنہاں راہواں توں جاویں
    انہاں راہوں دی مٹی چُمن میریاں اکھاں۔۔
ممتاز شاعر صوفی غلام مصطفیٰ تبسم کا لکھا ہوا یہ سپرہٹ ترانہ اس وقت پوری قوم کے دلوں کی آواز بن گیا تھا۔ انھی فنکاروں کا ایک اور ترانہ "کرنیل نی ، جرنیل نی۔۔" بھی بڑا مقبول ہوا تھا۔ ان دونوں ترانوں کو عظیم فلمساز اور ہدایتکار انور کمال پاشا کی پنجابی فلم پروہنا (1966) میں شامل کیا گیا تھا اور اداکارہ شیریں پر فلمایا گیا تھا۔ اس ناکام فلم کا سب سے یادگار روایتی گیت بھی ملکہ ترنم نورجہاں کی آواز میں تھا جس کے بول منظور جھلا نے لکھے تھے:
    نہ دل دیندی بے دردی نوں ، نہ کونج وانگوں کرلاندی ، کدی نہ پچھتاندی میں۔۔
اسی فلم میں سیف چغتائی نے پہلی بار مسعودرانا سے نذیربیگم کے ساتھ ایک دوگانا گوایا تھا "گجے پیار نہ رہندے نیں۔۔" ماہیا ٹائپ یہ گیت فلم میں شیریں اور ایک گمنام اداکار ضیاء پر فلمایا گیا تھا۔

سیف چغتائی ، پیشے کے لحاظ سے ایک وکیل تھے اور ایک شوقیہ موسیقار تھے۔ انھوں نے اپنے دس سالہ فلمی کیرئر میں کل سات فلموں کی موسیقی ترتیب دی تھی لیکن کوئی ایک بھی فلم باکس آفس پر کامیاب نہیں ہوئی تھی۔ چند فلموں میں گائیکی کے علاوہ نغمہ نگاری بھی کی تھی۔ ان کی پہلی فلم ہدایتکار رفیق رضوی کی اپنا پرایا (1959) تھی جس میں ایک درازقد اداکار سکندر نے بڑی اچھی اداکاری کی تھی ، غالباً فلم کی کہانی بھی انھی صاحب کی تھی۔ ایک معروف گلوکار سلیم شہزاد (پیار کی یاد نگاہوں میں بسائے رکھنا فیم) نے اس فلم میں بطور اداکار کام کیا اور جوڑی اداکارہ رخسانہ کے ساتھ تھی۔ ان پر احمدرشدی اور ناہید نیازی کا ایک گیت "دور سے نہ گھور ، پاس آ۔۔" فلمایا گیا تھا۔

اگلی دونوں فلموں منگتی (1961) اور فانوس (1963) میں بھی کوئی گیت مقبول نہ ہو سکا تھا لیکن چوتھی فلم لٹیرا (1964) میں نسیم بیگم کا گایا ہوا یہ گیت سپرہٹ ہوا تھا "نگاہیں ہو گئی پرنم ، ذرا آواز تو دینا ، دکھوں میں گر گئے ہیں ہم۔۔" اختر رضا قزلباش نامی گمنام شاعر کا لکھا ہوا یہ سدا بہار گیت فلم کی ہیروئن بہار پر فلمایا گیا تھا۔ اس فلم کے ہیرو اسلم پرویز تھے جن کے ہیروشپ کے دور کے تسلسل کی یہ آخری فلم تھی۔ 1988ء میں ان کے انتقال کے بعد ایک عرصہ سے رکی ہوئی پنجابی فلم بانو (1988) ریلیز ہوئی تھی جس میں وہ ، بہار ہی کے ہیرو تھے۔

سیف چغتائی کی آخری دو فلمیں 14 سال (1968) اور شیرجوان (1969) تھیں۔ اس آخری فلم میں انھوں نے وارث لدھیانوی کا لکھا ہوا ایک گیت "تساں دل منگیا ، اساں دے چھڈیا ، ہن جان وی کریئے فدا ، جے سجناں دا حکم ہووے۔۔" مسعودرانا اور نذیربیگم سے گوایا تھا جو فلم میں اکمل اور شیریں پر فلمایا گیا تھا۔ ان کا انتقال 2003ء میں ہوا تھا۔

مسعودرانا اور سیف چغتائی کے 2 فلمی گیت

0 اردو گیت ... 2 پنجابی گیت
1
فلم ... پروہنا ... پنجابی ... (1966) ... گلوکار: نذیر بیگم ، مسعود رانا ... موسیقی: سیف چغتائی ... شاعر: یوسف موج ... اداکار: شیریں ، ضیاء
2
فلم ... شیر جوان ... پنجابی ... (1969) ... گلوکار: مسعود رانا ، نذیر بیگم ... موسیقی: سیف چغتائی ... شاعر: ؟ ... اداکار: اکمل ، شیریں

مسعودرانا اور سیف چغتائی کے 0سولو گیت


مسعودرانا اور سیف چغتائی کے 2دو گانے

1گھجے پیار نہ رہندے نیں تے انگ انگ روے نچدا ، ہاسے ڈل ڈل پیندے نیں ... (فلم ... پروہنا ... 1966)
2تسی دل منگیا ، اسیں دے چھڈیا ، ہن جان وی کریئے فدا ، جے سجناں دا حکم ہووے ... (فلم ... شیر جوان ... 1969)

مسعودرانا اور سیف چغتائی کے 0کورس گیت


Masood Rana & Saif Chughtai: Latest Online film

Masood Rana & Saif Chughtai: Film posters
ProhnaSher Jawan
Masood Rana & Saif Chughtai:

0 joint Online films

(0 Urdu and 0 Punjabi films)

Masood Rana & Saif Chughtai:

Total 2 joint films

(0 Urdu, 2 Punjabi films)

1.1966: Prohna
(Punjabi)
2.1969: Sher Jawan
(Punjabi)


Masood Rana & Saif Chughtai: 2 songs

(0 Urdu and 2 Punjabi songs)

1.
Punjabi film
Prohna
from Friday, 26 August 1966
Singer(s): Nazir Begum, Masood Rana, Music: Saif Chughtai, Poet: , Actor(s): Shirin, Zia
2.
Punjabi film
Sher Jawan
from Friday, 30 May 1969
Singer(s): Masood Rana, Nazir Begum, Music: Saif Chughtai, Poet: , Actor(s): Akmal, Shirin


پاکستان فلم میگزین ۔۔۔ سنہری فلمی یادوں کا امین

پاکستان فلم میگزین ، پاکستانی فلموں ، فلمی گیتوں اور فلمی فنکاروں پر اولین ، منفرد اور ایک بے مثل معلوماتی اور تفریحی ویب سائٹ ہے جو 3 مئی 2000ء سے مسلسل اپ ڈیٹ ہورہی ہے۔ یہ ایک انفرادی کاوش ہے جو فارغ اوقات کا ایک بہترین مشغلہ بھی ہے۔ یہ تاریخ ساز ویب سائٹ کبھی نہ بن پاتی ، اگر پاکستانی فلموں میں میرے آئیڈیل گلوکار جناب مسعودرانا صاحب کے گیت نہ ہوتے۔ اس عظیم گلوکار کو ایک منفرد خراج تحسین پیش کرنے کے لئے اس کے گائے ہوئے ایک ہزار سے زائد گیتوں کا پہلا اردو ڈیٹابیس بنایا گیا ہے جس میں ریکارڈ محفوظ رکھنے کے علاوہ دیگر ساتھی فنکاروں پر تفصیلی مضامین بھی شائع کئے جارہے ہیں۔

تازہ ترین اپ ڈیٹس




Pakistan Film Magazine

The first and largest website on Pakistani films, music and artists with chronological film history since 1913, useful information's, facts & figures, milestones, filmo- & songographies, images, videos and Urdu/Punjabi articles on various film topics.



Hathkari
Hathkari
(1975)
Bandagi
Bandagi
(1972)
Aadmi
Aadmi
(1958)
Pardah
Pardah
(1966)



Artists database

Useful information's with detailed film records, milestones, videos, images etc..


Click on any category from the menu below and read more information's..