Pakistn Film Magazine in Urdu/Punjabi


A Tribute To The Legendary Playback Singer Masood Rana

Masood Rana - مسعودرانا


اطہر شاہ خان

ممتاز فنکار جناب اطہر شاہ خان المعروف مسٹر جیدی طویل علالت کے بعد10 مئی 2020ء کو انتقال کر گئے۔ (انا للہ وانا الیہ راجعون)

پاکستان ٹیلی ویژن پر انھوں نے بے شمار ڈرامے لکھے لیکن مسٹر جیدی کا جو لازوال کردار تخلیق کیا وہ ان سب ڈراموں پر ہمیشہ حاوی رہا اور ان کی شخصیت کا ایک مستقل حصہ بن گیا تھا۔

انھوں نے متعدد فلموں میں بطور مصنف ، نغمہ نگار ، مکالمہ نگار ، ہدایتکار اور اداکار بھی کام کیا لیکن کامیاب نہیں ہوئے۔ بطور معاون ہدایتکار ان کی پنجابی فلم منجی کتھے ڈاہواں (1974) میں مسعودرانا کے یہ دو گیت تھے:

مجھے اطہر شاہ خان خاص طور پر ایک مقبول عام ریڈیو پروگرام "رنگ ہی رنگ ، مسٹر جیدی کے سنگ" کے حوالے سے یاد ہیں جسے وہ مسٹرجیدی کے انداز میں پیش کرتے تھے۔

مسعودرانا کا ایک ریڈیو انٹرویو

اس کمرشل پروگرام میں وہ مختلف فنکاروں کے انٹرویوز پیش کرتے تھے اور زندگی میں پہلی بار اسی پروگرام میں مسعودرانا صاحب کا ایک انٹرویو سننے کا موقع ملا تھا۔

مجھے اچھی طرح سے یاد کہ اس انٹرویو سے قبل مسٹر جیدی اپنے مخصوص انداز میں ان کا مشہور زمانہ گیت "تیرے بنا یوں گھڑیاں بیتیں۔۔" گاتے ہیں اور آخری الفاظ ادا کرتے ہوئے ان کی آواز بیٹھ جاتی ہے۔

وہ ، رانا صاحب سے یہ سوال پوچھتے ہیں کہ وہ ہر گیت اتنی اونچی سروں میں کیوں گاتے ہیں؟

جواب میں مسعودرانا ، انھیں بتاتے ہیں کہ موسیقار جیسی دھن بناتا ہے ، اسی کے مطابق گانا پڑتا ہے۔

اسی انٹرویو میں مجھے پہلی بار معلوم ہوا تھا کہ مسعودرانا نے 1955ء میں ریڈیو پاکستان حیدرآباد میں پہلی بار گائیکی کی تھی اور انقلاب (1962) ان کی پہلی فلم تھی۔


Adam Khor
Adam Khor
(1991)
Doraha
Doraha
(1967)
BeReham
BeReham
(1967)
Doghla
Doghla
(1975)

Kamli
Kamli
(1946)
Mangti
Mangti
(1942)
Sanjog
Sanjog
(1943)
Mera Mahi
Mera Mahi
(1941)



پاکستان فلم میگزین ، سنہری فلمی یادوں کا امین

پاکستان فلم میگزین ، اپنی نوعیت کی اولین ، منفرد اور تاریخ ساز ویب سائٹ ہے جس پر ہزاروں پاکستانی فلموں ، فنکاروں اور گیتوں کی معلومات ، واقعات اور اعدادوشمار دستیاب ہیں۔ یہ ایک انفرادی کاوش ہے جو فارغ اوقات کا بہترین مشغلہ اور پاکستان کی فلمی تاریخ کو مرتب کرنے کا ایک انوکھا مشن بھی ہے جو 3 مئی 2000ء سے مسلسل جاری و ساری ہے۔

مسعود رانا پر ایک معلومات ویب سائٹ

یہ بے مثل ویب سائٹ کبھی نہ بن پاتی اگر پاکستانی فلموں میں میرے آل ٹائم فیورٹ پلے بیک سنگر جناب مسعودرانا صاحب کے گیت نہ ہوتے۔ اس عظیم گلوکار کے گیتوں کی تلاش و جستجو میں یہ سب تگ و دو کی جو گزشتہ دو دھائیوں سے پاکستانی فلمی معلومات کا سب سے بڑا آن لائن منبع ثابت ہوئی۔

2020ء سے مسعود رانا کی 25ویں برسی پر ایک ایسا شاندار خراج تحسین پیش کیا جارہا ہے کہ جو آج تک کسی دوسرے فنکار کو پیش نہیں کیا جا سکا۔ مسعودرانا کے ایک ہزار سے زائد فلمی گیتوں اور ساڑھے چھ سو فلموں کے اردو/پنجابی ڈیٹابیس کے علاوہ دیگر پاکستانی فنکاروں پر بھی بڑے تفصیلی معلوماتی مضامین لکھے جارہے ہیں۔

یہ سلسلہ اپنی تکمیل تک جاری رہے گا ، ان شاء اللہ۔۔!




PAK Magazine is an individual effort to compile and preserve the Pakistan's political, film and media history.
All external links on this site are only for the informational and educational purposes, and therefor, I am not responsible for the content of any external site.