Menu of Pakistan Film Magazine
Pakistn Film Magazine in Urdu/Punjabi


A Tribute To The Legendary Playback Singer Masood Rana

Masood Rana - مسعودرانا


صبیحہ خانم


صبیحہ خانم ایک پیدائشی فنکارہ تھی

13 جون 2020ء کو 85 سال کی عمر میں انتقال کر جانے والی عظیم اداکارہ صبیحہ خانم ایک پیدائشی فنکارہ تھی۔۔!

جذباتی اداکاری ہو یا شوخ و چنچل انداز ، وہ ہر کردار میں ایسے ڈھل جاتی تھی کہ جیسے وہ کردار اسی کے لیے تخلیق کیا گیا تھا۔ اس بے مثل اداکارہ نے اپنے طویل فلمی کیرئر میں ایسے ایسے لازوال کردار ادا کیے تھے کہ جن پر پوری ایک کتاب لکھی جا سکتی ہے۔

صبیحہ خانم کے چند امر کردار

صبیحہ خانم نے پچاس کے عشرہ کی پاکستانی فلموں میں ہیروئن کے عام کرداروں میں صف اول کی اداکارہ ہونے کے علاوہ عشق و محبت کی کلاسیکل داستانوں میں جو کردار سسی ، سوہنی اور لیلیٰ کے طور پر کیے تھے ، وہ بھی امر ہو گئے تھے۔ ایسا ہی ایک کردار نوراں کا تھا جو پنجاب کے ایک افسانوی کردار دلابھٹی کی محبوبہ تھی۔ پاکستان کی اس پہلی بلاک باسٹر فلم میں صبیحہ خانم پر بابا چشتی کا یہ شاہکار گیت فلمایا گیا تھا "واسطہ ای رب دا تو جائیں وے کبوترا۔۔" طفیل ہوشیار پوری کا لکھا ہوا یہ گیت صبیحہ پر فلمائے ہوئے گیتوں میں سب سے یادگار ترین گیت تھا۔ اسی فلم میں صبیحہ کا ایک مکالمہ فلم کی جان تھا جب وہ اپنی سہیلی سے کہتی ہے کہ "لاء میرے سجے گوڈے نوں ہتھ۔۔" وہ ہاتھ لگاتی ہے تو صبیحہ کا یہ شوخ انداز ، فلم بینوں کا دل موہ لیتا ہے کہ "نی ایہہ نئیوں ، ایہہ ای۔۔"

سوشل فلموں کا بہت بڑا نام

صبیحہ خانم سوشل فلموں کا بہت بڑا نام تھیں۔ انھوں نے ہیروئن کے روایتی کرداروں کے بعد پردہ سکرین پر ایک مہذب اور باوقار گھریلو خاتون کے کردار میں مثالی شہرت حاصل کی تھی۔ ایک چوٹی کی ہیروئن بننے کے بعد ایک چوٹی کی معاون اداکارہ کا ایسا مقام حاصل کیا تھا کہ فلم میں اس کی موجودگی میں دیگر کردارمحض خانہ پری کے لیے ہوتے تھے اور فلم کی کہانی ، آغاز سے انجام تک اسی کےگرد گھومتی تھی۔

ایسی ہی فلموں میں ایک فلم کنیز (1965) تھی جس میں صبیحہ خانم نے ایک ملازمہ کی بیٹی کا رول کیا تھا جو ایک نواب کی بہو بن جاتی ہے لیکن اپنے پس منظر کی وجہ سے قبول نہیں کی جاتی۔ وہ بیوہ ہونے سے قبل دو بچوں کی ماں بن جاتی ہے لیکن پہلا بچہ اس سے چھین لیا جاتا ہے جس کے لیے وہ تڑپتی ہے اور جو آخر میں مال و زر سے زیادہ ماں کی محبت و شفقت کو ترجیح دیتا ہے۔ اس فلم کی کہانی بڑی دلگداز ہوتی ہے جسے صبیحہ خانم کی جذباتی اداکاری یادگار بنا دیتی ہے۔ ٹائٹل اور تھیم سانگ گانے میں ید طولیٰ رکھنے والے عظیم گلوکار مسعودرانا نے اس فلمی کردار کے لیے ایک بڑا ہی پر اثر پس پردہ تھیم سانگ گایا تھا:

مسعودرانا کا صبیحہ خانم کے ساتھ دوسرا ساتھ ان کی ذاتی فلم تصویر (1966) میں تھا جس میں یہ تھیم سانگ تھا:

صبیحہ خانم
کی فلم میں موجودگی سے دیگر فنکاروں کی حیثیت ثانوی ہو جاتی تھی

صبیحہ خانم کے لیے مسعودرانا کے گیت

ایسے پر اثر تھیم سانگ ، فلم ڈائریکٹر اور رائٹر کا کام بڑا آسان کر دیتے تھے کیونکہ فلم بینوں پر جو اثر ایک پر سوز گیت کرتا تھا وہ کسی تحریر ، تصویر یا سکرین پلے میں ممکن نہیں ہوتا تھا۔ مسعودرانا کی پس پردہ آواز ایک غیب کی آواز کی طرح سے ہوتی تھی جس میں فلم کی کہانی کے علاوہ فلمی کرداروں کے لیے رہنمائی اور حوصلہ افزائی بھی ہوتی تھی۔ پر سوز آواز کا سحر ایسے جذباتی مناظر کو امر کر دیتا تھا اور یہی کمال انھیں دیگر گلوکاروں میں ممتاز بھی کرتا تھا۔

اسی فلم میں مسعودرانا نے صبیحہ خانم کے پس منظر میں مولانا الطاف حسین حالی کی مشہور زمانہ نعت بھی گائی تھی:

موسیقار خلیل احمد نے بغیر کسی ساز کے ایک عمدہ دھن بنائی تھی جس میں مسعودرانا کی دلکش آواز ایک سماں سا پیدا کر دیتی تھی۔ اسی فلم کے ایک منظر میں صبیحہ خانم قرآن کریم کی قرآت کرتے ہوئے بھی نظر آتی ہیں۔

مسعودرانا نے فلم ستمگر (1967) میں "ماں کے دل کو توڑ کر ، مامتا کی جنت چھوڑ کر..۔۔" اور فلم یار دا سہرا (1976) میں "مندا ہوندا یتیماں دا حال ، شالا مرن نہ ماواں..۔۔" بھی صبیحہ خانم کے ماں کے کرداروں کے لیے پلے بیک گیت کے طور پر گائے تھے جبکہ فلم پاکدامن (1969) میں ایک سالگرہ کا گیت تھا " گلاب کی سی پتی ، پشور کا مخانہ ، دیکھو میری جان بنی ہے موتی دانہ.." جسے فلم میں لہری صاحب پر بھی فلمایا گیا تھا۔ اسی فلم کا مشہور زمانہ گیت "ہار دینا نہ ہمت کہیں ، ایک سا وقت رہتا نہیں۔۔" بھی صبیحہ خانم ہی کے کردار کے لیے گایا جاتا ہے جو مسعودرانا اور مالا کی آوازوں میں علاؤالدین اور رخسانہ پر فلمایا جاتا ہے۔

صبیحہ خانم کا مسعودرانا کے ساتھ دوگانا

صبیحہ خانم نے اداکاری کے علاوہ چند فلمی گیت بھی گائے تھے لیکن اس شعبہ میں کامیابی نہیں ہوئی تھی۔ میرے علم میں اب تک اس کے بطور پس پردہ گلوکارہ کے طور پر کل چھ فلمی گیت ہیں جن میں سے فلم جوش انتقام اور شاہی محل (1968) کے کورس گیت تو نہیں سنے البتہ فلم اے پگ میرے ویر دی (1975) کے دونوں گیت سنے ہوئے ہیں جبکہ ایک گیت فلم شرابی (1973) کا تھا "سوہنیا اؤئے ، مکھ تیرا چن دی سویر اے۔۔" اس گیت کو غلام علی صاحب نے بھی گایا تھا اور خاصا مقبول ہوا تھا۔ صبیحہ خانم نے جو واحد دوگانا گایا تھا وہ بھی مسعودرانا ہی کے ساتھ تھا جو فلم ظالم تے مظلوم (1974) میں ایک مزاحیہ گیت تھا:

اس گیت کی دھن وجاہت عطرے نے بنائی تھی اور فلم میں منورظریف اور صاعقہ پر فلمایا گیا تھا۔

صبیحہ خانم کا پس منظر

صبیحہ خانم کو اس کے باپ محمدعلی ماہیا نے پہلے سٹیج اور پھر فلم میں متعارف کروایا تھا۔ فلم ناجی (1959) کے ٹائٹل پر فلمساز کے طور پر "صبیحہ محمدعلی" لکھا ہوا تھا اور شاید اسی لیے سستی قسم کے فلمی صحافی جو اداکاروں کے سکینڈل اچھالنا ، اپنی پیشہ وارانہ کارکردگی سمجھتے تھے ، طنزیہ "صبیحہ ایم اے" بھی لکھا کرتے تھے۔ روایتی تعلیم سے محروم اس پر عزم اداکارہ نے شادی کے بعد بی اے کی ڈگری لے کر ایک نئی مثال قائم کی تھی۔ یار لوگوں نے اس کے معاشقوں پر بھی خاصی مغز ماری کی تھی اور کبھی اسے درپن اور کبھی مسعود کے ساتھ نتھی کرتے تھے لیکن وہ تو پہلی نظر ہی میں اپنے سنتوش کی ہو گئی تھی۔

صبیحہ خانم کی پیدائش یکم اکتوبر 1935ء بتائی جاتی ہے۔ صبیحہ کا باپ گجرات کا ایک کوچوان تھا اور خاصا خوش الحان تھا۔ پنجابی گائیکی کی ایک مشہور صنف "ماہیا" گانے کا ماہر تھا جو اس کے نام کا لاحقہ بن گیا تھا۔ ایک امیر زادی کو اپنے تانگے پر کالج چھوڑنے جاتا تھا اور اپنے گیتوں سے اس کا دل جیتنے میں کامیاب ہو گیا تھا۔

یہاں مجھے فلم اج دا مہینوال (1973) میں مسعودرانا کا گایا ہوا ایک ماہیا یاد آرہا ہے جو بالکل ایسی ہی ایک فلمی صورتحال کے لیے گایا گیا تھا "دو پتر اناراں دے ، ربا ساڈا ماہی میل دے ، دن آ گئے بہاراں دے۔۔"

سماجی اونچ نیچ کا نتیجہ تھا کہ اقبال نامی امیر زادی ایک دن اپنے کوچوان آشنا کے ساتھ گھر سے فرار ہو گئی تھی۔ عشق کا بھوت اترا اور تلخ زمینی حقائق سامنے آئے تو اس نااہل اور نکھٹو نے ایک شریف زادی کو گھر کی باعزت چار دیواری سے نکال کر سٹیج اور فلم کی رنگین اور بے رحم دنیا تک پہنچا دیا تھا۔

1938ء میں بننے والی فلم سسی پنوں میں بالو نامی اداکارہ اس وقت تک مختار بیگم نامی ایک بچی کی ماں بن چکی تھی اور اپنی نومولود بچی کے مستقبل کی فکر میں جوانی ہی میں دنیا سے گذر گئی تھی۔

صبیحہ خانم کا فلمی کیرئر

حریص باپ نے بیٹی کے جوان ہونے کا انتظار بڑی بے صبری سے کیا تھا اور پہلے اسے سٹیج پر اور پھر فلم نگری تک لے گیا تھا۔ مختار بیگم ، صبیحہ کے نام سے صرف پندرہ سال کی عمر میں فلم بیلی (1950) میں متعارف ہوئی تھی جس میں اس کا ساتھ اپنے مستقبل کے شوہر اداکار سنتوش کے ساتھ تھا لیکن جس کے ساتھ شادی یکم اکتوبر 1958ء تک نہ ہو سکی تھی۔ یہاں بھی ایک سنگدل اور حریص باپ ، ظالم سماج بن گیا تھا جو پیسے کمانے والی مشین بیٹی کو اتنی آسانی سے بھلا کیسے کھو سکتا تھا۔

صبیحہ خانم کی پہلی سپر ہٹ فلم دو آنسو بھی اسی سال ریلیز ہوئی تھی جو پاکستان کی دوسری لیکن پہلی سلور جوبلی اردو فلم بھی تھی۔ کارکردگی کے لحاظ سے پہلی بڑی فلم گمنام (1954) تھی جس میں ایک پگلی کے رول میں بے حد سراہا گیا تھا اور اس فلم میں فلمایا گیا اقبال بانو کا یہ گیت "پائل میں گیت ہیں چھم چھم کے۔۔" پہلا سپر ہٹ گیت تھا۔ اسی سال ریلیز ہونے والی فلم سسی ، پاکستان کی پہلی گولڈن جوبلی فلم تھی جس میں صبیحہ خانم کا ٹائٹل رول تھا۔ 1956ء کی فلم دلا بھٹی ، پاکستان کی پہلی بلاک باسٹر فلم تھی جس کی کمائی سے لاہور کا ایورنیو سٹوڈیو بنا تھا۔

صبیحہ خانم کی خاص خاص فلمیں

قاتل (1955) ، حمیدہ ، چھوٹی بیگم ، سرفروش اور حاتم (1956) ، داتا ، آس پاس ، عشق لیلیٰ ، وعدہ اور سات لاکھ (1957) ، شیخ چلی ، دربار ، مکھڑا (1958) ، ناجی (1959) ، ایاز (1960) ، موسیقار (1962) ، دامن (1963) اور سوال (1966) وغیرہ بطورہیروئن ، صبیحہ خانم کی بڑی بڑی فلمیں تھیں جبکہ فلم شکوہ (1963) سے صبیحہ خانم نے ینگ ٹو اولڈ کریکٹرز میں آنا شروع کیا تھا اور بے شمار فلموں میں اپنی اداکاری کی دھاک بٹھا دی تھی جن میں کنیز (1965) ، دیور بھابھی (1967) ، ناہید (1968) ، لاڈلا ، ماں بیٹا ، پاکدامن (1969) ، انجمن ، سجناں دور دیا ، مترئی ماں (1970) ، گرہستی ، تہذیب ، یار دیس پنجاب دے ، بندہ بشر ، بھین بھرا (1971) ایک رات ، انتقام (1972) ، شرابی (1973) ، دھن جگرا ماں دا ، اک گناہ اور سہی ، ماجھا ساجھا ، فرض تے اولاد ، پہچان ، دلاں وچ رب وسدا (1975) ، ابھی تو میں جوان ہوں ، دشمن کی تلاش (1978) ، عشق نچاوے گلی گلی (1984) اور پیار کرن توں نئیں ڈرنا (1991) وغیرہ شامل تھیں۔

مسعودرانا اور صبیحہ کے فلمی گیت

کل 6 گیت ... 5 اردو گیت ... 1 پنجابی گیت
1

یہ دنیا ، کسی کی ہوئی ہے نہ ہوگی ، اسی طرح چپ چاپ آنسو پیے جا..

فلم ... کنیز ... اردو ... (1965) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: خلیل احمد ... شاعر: حمایت علی شاعر ... اداکار: (پس پردہ، صبیحہ خانم)
2

دنیا کا یہ دستور ہے ، دنیا سے گلہ کیا ، آئینے کی قسمت میں ہے پتھر کے سوا کیا..

فلم ... تصویر ... اردو ... (1966) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: خلیل احمد ... شاعر: حمایت علی شاعر ... اداکار: (پس پردہ، صبیحہ خانم)
3

وہ ﷺنبیوں میں رحمت لقب پانے والا ، مرادیں غریبوں کی بر لانے والا..

فلم ... تصویر ... اردو ... (1966) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: خلیل احمد ... شاعر: مولانا الطاف حسین حالی ... اداکار: (پس پردہ، صبیحہ خانم)
4

ماں کے دل کو توڑ کر ، مامتا کی جنت چھوڑ کر..

فلم ... ستمگر ... اردو ... (1967) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: تصدق حسین ... شاعر: فیاض ہاشمی ... اداکار: (پس پردہ، صبیحہ ، درپن)
5

گلاب کی سی پتی ، پشور کا مخانہ ، دیکھو میری جان بنی ہے موتی دانہ..

فلم ... پاک دامن ... اردو ... (1969) ... گلوکار: مالا ، مسعود رانا مع ساتھی ... موسیقی: ماسٹر عنایت حسین ... شاعر: قتیل شفائی ... اداکار: صبیحہ ، لہری مع ساتھی
6

مندا ہوندا یتیماں دا حال ، شالا مرن نہ ماواں..

فلم ... یار دا سہرا ... پنجابی ... (1976) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: صفدر حسین ... شاعر: وارث لدھیانوی ... اداکار: (پس پردہ ، صبیحہ)

مسعودرانا اور صبیحہ کے 5 اردو گیت

1

یہ دنیا ، کسی کی ہوئی ہے نہ ہوگی ، اسی طرح چپ چاپ آنسو پیے جا ...

(فلم ... کنیز ... 1965)
2

دنیا کا یہ دستور ہے ، دنیا سے گلہ کیا ، آئینے کی قسمت میں ہے پتھر کے سوا کیا ...

(فلم ... تصویر ... 1966)
3

وہ ﷺنبیوں میں رحمت لقب پانے والا ، مرادیں غریبوں کی بر لانے والا ...

(فلم ... تصویر ... 1966)
4

ماں کے دل کو توڑ کر ، مامتا کی جنت چھوڑ کر ...

(فلم ... ستمگر ... 1967)
5

گلاب کی سی پتی ، پشور کا مخانہ ، دیکھو میری جان بنی ہے موتی دانہ ...

(فلم ... پاک دامن ... 1969)

مسعودرانا اور صبیحہ کے 1 پنجابی گیت

1

مندا ہوندا یتیماں دا حال ، شالا مرن نہ ماواں ...

(فلم ... یار دا سہرا ... 1976)

مسعودرانا اور صبیحہ کے 5سولو گیت

1

یہ دنیا ، کسی کی ہوئی ہے نہ ہوگی ، اسی طرح چپ چاپ آنسو پیے جا ...

(فلم ... کنیز ... 1965)
2

دنیا کا یہ دستور ہے ، دنیا سے گلہ کیا ، آئینے کی قسمت میں ہے پتھر کے سوا کیا ...

(فلم ... تصویر ... 1966)
3

وہ ﷺنبیوں میں رحمت لقب پانے والا ، مرادیں غریبوں کی بر لانے والا ...

(فلم ... تصویر ... 1966)
4

ماں کے دل کو توڑ کر ، مامتا کی جنت چھوڑ کر ...

(فلم ... ستمگر ... 1967)
5

مندا ہوندا یتیماں دا حال ، شالا مرن نہ ماواں ...

(فلم ... یار دا سہرا ... 1976)

مسعودرانا اور صبیحہ کے 0دوگانے


مسعودرانا اور صبیحہ کے 1کورس گیت

1گلاب کی سی پتی ، پشور کا مخانہ ، دیکھو میری جان بنی ہے موتی دانہ ... (فلم ... پاک دامن ... 1969)


Masood Rana & Sabiha: Latest Online film

Aan Milo Sajna

(Punjabi/Urdu double version - Color - Friday, 22 October 1993)


Masood Rana & Sabiha: Film posters
ShikwaKaneezTasvirSitamgarShehanshah-e-JahangirPak DaamanGarhastiBanda BasharKhawab Aur ZindagiBaharon Ki ManzilDharti Sheran DiSayyo Ni Mera MahiDhan Jigra Maa DaReshma Jawan Ho GeyiYaar Da SehraWardatZarooratAab-e-HayyatIshq Nachaway Gali GaliPyar Karn Tun Nein DarnaAan Milo Sajna
Masood Rana & Sabiha:

9 joint Online films

(5 Urdu and 8 Punjabi films)

1.1973: Khawab Aur Zindagi
(Urdu)
2.1974: Sayyo Ni Mera Mahi
(Punjabi)
3.1975: Dhan Jigra Maa Da
(Punjabi)
4.1975: Reshma Jawan Ho Geyi
(Punjabi)
5.1985: Angara
(Punjabi)
6.1991: Nigahen
(Punjabi/Urdu double version)
7.1991: Pyar Karn Tun Nein Darna
(Punjabi/Urdu double version)
8.1992: Naela
(Punjabi/Urdu double version)
9.1993: Aan Milo Sajna
(Punjabi/Urdu double version)
Masood Rana & Sabiha:

Total 32 joint films

(14 Urdu and 14 Punjabi films)

1.1963: Rishta
(Punjabi)
2.1963: Shikwa
(Urdu)
3.1965: Kaneez
(Urdu)
4.1966: Tasvir
(Urdu)
5.1967: Sitamgar
(Urdu)
6.1968: Shehanshah-e-Jahangir
(Urdu)
7.1968: Commander
(Urdu)
8.1969: Pak Daaman
(Urdu)
9.1970: Matrei Maa
(Punjabi)
10.1971: Garhasti
(Urdu)
11.1971: Banda Bashar
(Punjabi)
12.1973: Khawab Aur Zindagi
(Urdu)
13.1973: Baharon Ki Manzil
(Urdu)
14.1973: Dharti Sheran Di
(Punjabi)
15.1974: Sayyo Ni Mera Mahi
(Punjabi)
16.1974: Qatil
(Punjabi)
17.1974: Deedar
(Urdu)
18.1975: Dhan Jigra Maa Da
(Punjabi)
19.1975: Reshma Jawan Ho Geyi
(Punjabi)
20.1976: Yaar Da Sehra
(Punjabi)
21.1976: Wardat
(Punjabi)
22.1976: Zaroorat
(Urdu)
23.1979: Mout Meri Zindagi
(Urdu)
24.1982: Aab-e-Hayyat
(Urdu)
25.1984: Ishq Nachaway Gali Gali
(Punjabi)
26.1985: Angara
(Punjabi)
27.1987: Chann Mahi
(Punjabi)
28.1991: Nigahen
(Punjabi/Urdu double version)
29.1991: Pyar Karn Tun Nein Darna
(Punjabi/Urdu double version)
30.1992: Naela
(Punjabi/Urdu double version)
31.1993: Aan Milo Sajna
(Punjabi/Urdu double version)
32.Unreleased: Khali Hath
(Punjabi)


Masood Rana & Sabiha: 6 songs

(5 Urdu and 1 Punjabi songs)

1.
Urdu film
Kaneez
from Friday, 26 November 1965
Singer(s): Masood Rana, Music: Khalil Ahmad, Poet: Himayat Ali Shair, Actor(s): (Playback . Sabiha Khanum)
2.
Urdu film
Tasvir
from Friday, 11 February 1966
Singer(s): Masood Rana, Music: Khalil Ahmad, Poet: Himayat Ali Shair, Actor(s): (Playback - Sabiha Khanum)
3.
Urdu film
Tasvir
from Friday, 11 February 1966
Singer(s): Masood Rana, Music: Khalil Ahmad, Poet: Moulana Altaf Hussain Hali, Actor(s): (Playback - Sabiha Khanum)
4.
Urdu film
Sitamgar
from Friday, 10 November 1967
Singer(s): Masood Rana, Music: Tasadduq Hussain, Poet: Fyaz Hashmi, Actor(s): (Playback - Sabiha, Darpan)
5.
Urdu film
Pak Daaman
from Friday, 10 October 1969
Singer(s): Mala, Masood Rana & Co., Music: Master Inayat Hussain, Poet: Qateel Shafai, Actor(s): Sabiha, Lehri & Co.
6.
Punjabi film
Yaar Da Sehra
from Friday, 13 February 1976
Singer(s): Masood Rana, Music: Safdar Hussain, Poet: Waris Ludhyanvi, Actor(s): (Playback - Sabiha)

Hitler
Hitler
(1986)
Hoshiar
Hoshiar
(1990)
Gulshan
Gulshan
(1959)
Shani
Shani
(1989)
Pani
Pani
(1964)

Raasta
Raasta
(2017)
Mouj Mela
Mouj Mela
(1963)
Shanakhat Parade
Shanakhat Parade
(Unreleased)

Arsi
Arsi
(1947)
Papi
Papi
(1943)
Ragni
Ragni
(1945)
Dhamki
Dhamki
(1945)

Nek Abla
Nek Abla
(1932)
Aurat
Aurat
(1940)
Alam Ara
Alam Ara
(1931)
Bhai
Bhai
(1944)



پاکستان فلم میگزین ۔۔۔ سنہری فلمی یادوں کا امین

پاکستان فلم میگزین ، پاکستانی فلموں ، فنکاروں ، گیتوں اور اہم فلمی معلومات پر مبنی انٹرنیٹ پر اپنی نوعیت کی اولین ، منفرد اور تاریخ ساز ویب سائٹ ہے جو 3 مئی 2000ء سے مسلسل اپ ڈیٹ ہورہی ہے۔ یہ ایک انفرادی کاوش ہے جو فارغ اوقات کا بہترین مشغلہ اور پاکستان کی فلمی تاریخ کو مرتب کرنے کا ایک انوکھا مشن بھی ہے۔

A website of Masood Rana

یہ بے مثل ویب سائٹ کبھی نہ بن پاتی اگر پاکستانی فلموں میں میرے آل ٹائم فیورٹ پلے بیک سنگر جناب مسعودرانا صاحب کے گیت نہ ہوتے۔ انھی کے گیتوں کی تلاش میں یہ عظیم الشان ویب سائٹ وجود میں آئی۔ 2020ء سے اس عظیم فنکار کی 25ویں برسی پر ایک ایسا شاندار خراج تحسین پیش کیا جارہا ہے کہ جو آج تک کبھی کسی دوسرے فنکار کو پیش نہیں کیا جا سکا۔ مسعودرانا کے ایک ہزار سے زائد فلمی گیتوں کے اردو/پنجابی ڈیٹابیس کے علاوہ ان کے ساتھی فنکاروں پر بھی بڑے تفصیلی معلوماتی مضامین لکھے جارہے ہیں۔ یہ سلسلہ اپنی تکمیل تک جاری رہے گا ، ان شاء اللہ۔۔!

انورکمال پاشا
انورکمال پاشا
رضا میر
رضا میر
محمد رفیع
محمد رفیع
آصف جاہ
آصف جاہ
کے خورشید
کے خورشید
وارث لدھیانوی
وارث لدھیانوی
ایم اسماعیل
ایم اسماعیل
طلعت صدیقی
طلعت صدیقی
اخترحسین اکھیاں
اخترحسین اکھیاں
ناصرہ
ناصرہ
الیاس کاشمیری
الیاس کاشمیری
حسن لطیف
حسن لطیف
بھائیا اے حمید
بھائیا اے حمید
حامدعلی بیلا
حامدعلی بیلا
شیریں
شیریں
سنتوش کمار
سنتوش کمار
امین ملک
امین ملک
وحیدمراد
وحیدمراد
حیدر
حیدر
اکبرعلی اکو
اکبرعلی اکو
رحمان ورما
رحمان ورما
جمیل اختر
جمیل اختر
سلطان راہی
سلطان راہی
سدھیر
سدھیر
اے حمید
اے حمید
اقبال کاشمیری
اقبال کاشمیری
ایم صادق
ایم صادق
سیما
سیما
زلفی
زلفی
عالیہ
عالیہ
ملکہ ترنم نور جہاں
ملکہ ترنم نور جہاں
عزیز میرٹھی
عزیز میرٹھی
ساقی
ساقی
فردوس
فردوس
دیبو بھٹا چاریہ
دیبو بھٹا چاریہ
سرور بارہ بنکوی
سرور بارہ بنکوی
رانی
رانی
فیروز نظامی
فیروز نظامی
خواجہ سرفراز
خواجہ سرفراز
آئٹم گرلز
آئٹم گرلز
الحامد
الحامد
غلام حسین شبیر
غلام حسین شبیر
ننھا
ننھا
تصورخانم
تصورخانم
ناہید
ناہید
اقبال شہزاد
اقبال شہزاد
ندیم
ندیم
ظہیر کاشمیری
ظہیر کاشمیری
افتخارخان
افتخارخان
حمایت علی شاعر
حمایت علی شاعر
علی اعجاز
علی اعجاز
سلطان محمود آشفتہ
سلطان محمود آشفتہ
وحیدڈار
وحیدڈار
منظورجھلا
منظورجھلا
بخشی وزیر
بخشی وزیر
حسن طارق
حسن طارق
حمیدچوہدری
حمیدچوہدری
ماسٹر رفیق علی
ماسٹر رفیق علی
ماسٹر تصدق حسین
ماسٹر تصدق حسین
روبینہ بدر
روبینہ بدر
مسرور انور
مسرور انور
جی اے چشتی
جی اے چشتی
مہدی حسن
مہدی حسن
نثار بزمی
نثار بزمی
مصلح الدین
مصلح الدین
سلیم رضا
سلیم رضا
اسماعیل متوالا
اسماعیل متوالا
دلجیت مرزا
دلجیت مرزا
سیف الدین سیف
سیف الدین سیف
سلیم اقبال
سلیم اقبال
حنیف
حنیف
منیر حسین
منیر حسین
قتیل شفائی
قتیل شفائی
نسیمہ شاہین
نسیمہ شاہین
حزیں قادری
حزیں قادری
سہیل رعنا
سہیل رعنا
خان عطا الرحمان
خان عطا الرحمان
شبنم
شبنم
یاسمین
یاسمین
رشیداختر
رشیداختر
احمد رشدی
احمد رشدی
زینت
زینت
رفیق رضوی
رفیق رضوی
نگہت سیما
نگہت سیما
سائیں اختر
سائیں اختر
ایم سلیم
ایم سلیم
آغا جی اے گل
آغا جی اے گل
آغا حسینی
آغا حسینی
افضل خان
افضل خان
طالش
طالش
موج لکھنوی
موج لکھنوی
شوکت علی
شوکت علی
تانی
تانی
ایم جے رانا
ایم جے رانا
عنایت حسین بھٹی
عنایت حسین بھٹی
ریاض احمد
ریاض احمد
ظہورناظم
ظہورناظم
جعفر بخاری
جعفر بخاری
پرویز ملک
پرویز ملک
حسنہ
حسنہ
اے شاہ
اے شاہ
ناشاد
ناشاد
طافو
طافو
وزیر افضل
وزیر افضل
سیف چغتائی
سیف چغتائی
نیلو
نیلو
ریاض الرحمان ساغر
ریاض الرحمان ساغر
اعجاز
اعجاز
خلیفہ نذیر
خلیفہ نذیر
وجاہت عطرے
وجاہت عطرے
مشیر کاظمی
مشیر کاظمی
خلیل احمد
خلیل احمد
ایم ایس ڈار
ایم ایس ڈار
راجہ حفیظ
راجہ حفیظ
مظہر شاہ
مظہر شاہ
اسد بخاری
اسد بخاری
سید کمال
سید کمال
ایم اکرم
ایم اکرم
مشتاق علی
مشتاق علی
مسعودپرویز
مسعودپرویز
امجدبوبی
امجدبوبی
ماسٹر عنایت حسین
ماسٹر عنایت حسین
نسیمہ خان
نسیمہ خان
حبیب
حبیب
کریم شہاب الدین
کریم شہاب الدین
فضل حسین
فضل حسین
طارق عزیز
طارق عزیز
تسلیم فاضلی
تسلیم فاضلی
ساون
ساون
ایس اے بخاری
ایس اے بخاری
اطہر شاہ خان
اطہر شاہ خان
نذیرعلی
نذیرعلی
شاہد
شاہد
سعیدگیلانی
سعیدگیلانی
روزینہ
روزینہ
نبیلہ
نبیلہ
یوسف خان
یوسف خان
ریاض شاہد
ریاض شاہد
سلمیٰ ممتاز
سلمیٰ ممتاز
نسیم بیگم
نسیم بیگم
حسن عسکری
حسن عسکری
اختریوسف
اختریوسف
اسلم ڈار
اسلم ڈار
شمیم آرا
شمیم آرا
عمرشریف
عمرشریف
اعظم چشتی
اعظم چشتی
کمار
کمار
اکمل
اکمل
غزالہ
غزالہ
طفیل ہوشیارپوری
طفیل ہوشیارپوری
منوررشید
منوررشید
اسلم ایرانی
اسلم ایرانی
لیلیٰ
لیلیٰ
نذیر بیگم
نذیر بیگم
ابو شاہ
ابو شاہ
محمد علی
محمد علی
صفدرحسین
صفدرحسین
ماسٹر عبد اللہ
ماسٹر عبد اللہ
منورظریف
منورظریف
حیدر چوہدری
حیدر چوہدری
آئرن پروین
آئرن پروین
اعظم بیگ
اعظم بیگ
احمد راہی
احمد راہی
رضیہ
رضیہ
خواجہ خورشید انور
خواجہ خورشید انور
ساحل فارانی
ساحل فارانی
قوی
قوی
آصف جاوید
آصف جاوید
نذیر
نذیر
کیفی
کیفی
البیلا
البیلا
شبانہ
شبانہ
شریف نیر
شریف نیر
رنگیلا
رنگیلا
خواجہ پرویز
خواجہ پرویز
لال محمد اقبال
لال محمد اقبال
صبیحہ خانم
صبیحہ خانم
نذر
نذر
نورمحمدچارلی
نورمحمدچارلی
سلیم کاشر
سلیم کاشر
مظفروارثی
مظفروارثی
منیر نیازی
منیر نیازی
رشید عطرے
رشید عطرے
تنویر نقوی
تنویر نقوی
مسعود رانا
مسعود رانا
نغمہ
نغمہ
صہبااختر
صہبااختر
الطاف حسین
الطاف حسین
ماسٹر عاشق حسین
ماسٹر عاشق حسین
ایم اشرف
ایم اشرف
شوکت حسین رضوی
شوکت حسین رضوی
لقمان
لقمان
بابا عالم سیاہ پوش
بابا عالم سیاہ پوش
سلونی
سلونی
ایس ایم یوسف
ایس ایم یوسف
شیون رضوی
شیون رضوی
خلیل قیصر
خلیل قیصر
مالا
مالا
کلیم عثمانی
کلیم عثمانی
ریاض احمد راجو
ریاض احمد راجو
حبیب جالب
حبیب جالب
نذیرجعفری
نذیرجعفری
غلام نبی ، عبداللطیف
غلام نبی ، عبداللطیف
علاؤالدین
علاؤالدین
ماسٹر مراد
ماسٹر مراد
طفیل فاروقی
طفیل فاروقی
شباب کیرانوی
شباب کیرانوی
درپن
درپن
روبن گھوش
روبن گھوش
دیبا
دیبا
لہری
لہری
ارشدکاظمی
ارشدکاظمی
رونا لیلیٰ
رونا لیلیٰ
ایم اے رشید
ایم اے رشید
اقبال حسن
اقبال حسن
قدیرغوری
قدیرغوری
سنگیتا
سنگیتا
زیبا
زیبا
فیاض ہاشمی
فیاض ہاشمی
احتشام ، مستفیض
احتشام ، مستفیض
کمال احمد
کمال احمد
ظہیرریحان
ظہیرریحان
ایس سلیمان
ایس سلیمان
رخسانہ
رخسانہ
نذرالاسلام
نذرالاسلام
نرالا
نرالا
امداد حسین
امداد حسین
مسرت نذیر
مسرت نذیر
آسیہ
آسیہ
علی حسین
علی حسین



PAK Magazine is an individual effort to compile and preserve the Pakistan's political, film and media history.
All external links on this site are only for the informational and educational purposes, and therefor, I am not responsible for the content of any external site.