Menu of Pakistan Film Magazine
Pakistn Film Magazine in Urdu/Punjabi


A Tribute To The Legendary Playback Singer Masood Rana

Masood Rana - مسعودرانا


سدھیر اور مسعودرانا

سدھیر
پاکستانی فلمی تاریخ کے واحد اداکارتھے کہ جنہوں نے تقریباَ چالیس سالہ فلمی کیرئر میں ہمیشہ مرکزی کردار ادا کیے تھے Sudeer

سدھیر ، پاکستان کی فلمی تاریخ کے پہلے سپر سٹار اور ابتدائی دور کے سب سے کامیاب اور مقبول ترین فلمی ہیرو تھے۔ ان کی پہلی فلم فرض تقسیم سے قبل لاہور میں بنی تھی۔ قیام پاکستان کے بعد تیسری ریلیز شدہ فلم ہچکولے (1949) کے ہیرو بھی تھے۔ انھیں بریک تھرو ملکہ ترنم نورجہاں کی مشہور زمانہ نغماتی فلم دوپٹہ (1952) سے ملا تھا جس میں وہ اجے کمار نامی ایک گمنام اداکار کے مقابل سیکنڈ ہیرو تھے لیکن پوری فلم پر چھائے ہوئے تھے۔ سدھیر کو یہ منفرد اعزاز بھی حاصل ہے کہ اپنے تقریباَ چالیس سالہ فلمی کیرئر میں ہمیشہ مرکزی کرداروں میں کاسٹ ہوتے تھے اور بڑے بڑے سپر سٹارز ، ان کے مقابل ثانوی کرداروں میں نظر آتے تھے۔

سدھیر ، اپنے ابتدائی دور میں ایک آل راؤنڈ اداکار تھے جنہیں گمنام (1954) ، طوفان (1955) ، چھوٹی بیگم ، ماہی منڈا (1956) ، داتا ، آنکھ کا نشہ ، یکے والی (1957) ، جان بہار ، جٹی (1958) اور جھومر (1959) جیسی سماجی اور نغماتی فلموں کے علاوہ سسی (1954) ، سوہنی (1955) ، دلابھٹی ، مرزا صاحباں ، گڈی گڈا (1956) ، نوراں (1957) ، انارکلی (1958) اور گل بکاؤلی (1961) جیسی رومانٹک اور لوک داستانوں پر مبنی فلموں میں بھی کاسٹ کیا گیا تھا۔ انھیں حاتم (1957) ، کرتار سنگھ (1959) اور غالب (1961) جیسی تاریخی فلموں کے علاوہ باغی (1956) ، آخری نشان (1958) ، عجب خان (1961) اور فرنگی (1964) جیسی بڑی بڑی ایکشن فلموں کا ہیرو ہونے کا اعزاز بھی حاصل ہے۔

پاکستان کی فلمی تاریخ میں پچاس کا پہلا عشرہ سدھیر کے نام تھا جس میں کل پانچ گولڈن جوبلی منانے والی اردو فلموں میں سے چار کے وہ ہیرو تھے اور سب سے زیادہ گیارہ سلورجوبلی فلمیں بھی انھی کے کریڈٹ پر تھیں۔ ایسی فلموں میں پاکستان کی پہلی گولڈن جوبلی اردو فلم سسی (1954) اور پہلی ایکشن فلم باغی (1956) جیسی یادگار فلمیں بھی تھیں۔ یہ ریکارڈز کراچی سرکٹ کے ہیں جبکہ لاہور سرکٹ اور پنجابی فلموں کا مکمل ریکارڈ دستیاب نہیں ہے جہاں بتایا جاتا ہے کہ دلا بھٹی (1956) اور یکے والی (1957) جیسی بلاک باسٹر فلموں نے بزنس کے نئے ریکارڈز قائم کیے تھے اور ان فلموں کی کمائی سے دو بڑے نگار خانے ، ایورنیو اور باری سٹوڈیو وجود میں آئے تھے۔ ان کے علاوہ کرتار سنگھ (1959) جیسی تاریخی فلم بھی سدھیر کے کریڈٹ پر ہے جس کے بارے میں بتایا جاتا ہے کہ یہ فلم بھارتی صوبہ پنجاب میں بھی مسلسل تین سال تک زیر نمائش رہی تھی۔ یاد رہے کہ پچاس کے عشرہ میں جوبلیاں کرنے والی فلمیں ستر اور اسی کے عشروں میں جوبلیاں منانے والی فلموں سے دگنی کامیاب ہوتی تھیں۔ اس کی وجہ یہ تھی کہ اس وقت نہ تو زیادہ سینما گھر ہوتے تھے ، نہ ہی فلم بینوں کی اتنی تعداد ہوتی تھی اور نہ ہی فلموں پر اتنی لاگت آتی تھی۔ ٹیلی ویژن بھی نہیں تھا اور اسی لیے فلم جو واحد نشہ ہوتا تھا وہ لوگوں کو بار بار سینما گھروں تک لے جاتا تھا اور ایسے میں جو فلمیں کامیاب ہوتی تھیں وہ اپنی لاگت سے کہیں زیادہ پیسہ کما لیتی تھیں۔ اس وقت مقابلہ بڑا سخت ہوتا تھا کیونکہ بھارتی فلمیں بھی ملک بھر میں ریلیز ہوتی تھیں اور ان کے مقابلے میں جب کوئی فلم کامیاب ہوتی تھی تو وہ واقعی کامیاب ہوتی تھی۔

ساٹھ اور ستر کے عشروں کا دور انتہائی مقابلے کا دور تھا جس میں بہت بڑے بڑے فلمی ہیروز موجود تھے۔ اس دور میں سدھیر کی پہچان ایک بھاری بھر کم ایکشن فلمی ہیرو کی تھی جو ایک غیور ، بہادر اور جوانمردی کے پیکر کے طور پر فلموں میں نظر آتے تھے اور عوام الناس میں اسقدر مقبول تھے کہ ان کی مقبولیت کا ریکارڈ اگر کسی نے توڑا تھا تو وہ صرف سلطان راہی تھے۔ اس عشرہ میں جہاں ان کی فلم فرنگی (1964) ایک معرکتہ الآرا فلم کے طور پر یاد رکھی جائے گی وہاں جی دار (1965) پاکستان کی پہلی فلم تھی جس نے ہفتوں کے لحاظ سے پلاٹینم جوبلی کا اعزاز حاصل کیا تھا۔ دلچسپ بات ہے کہ ستر کے عشرہ میں بھی سدھیر کی ایک پنجابی فلم ماں پتر (1970) نے کراچی میں پلاٹینم جوبلی کی تھی جبکہ اس عشرہ کی ایک بڑی اردو فلم ان داتا (1976) تھی جس میں وہ سلطان راہی اور محمدعلی کے باپ بنے تھے اور پوری فلم پر چھائے ہوئے تھے۔ اس فلم کے ضمن میں یہ بات بھی یاد رکھی جائے گی کہ اس فلم کا جو اگلا ورژن فلم سن آف ان داتا (1987) کے طور پر بنایا گیا تھا ، اس میں بھی سدھیر پوری فلم پر چھائے ہوئے تھے اور یہ ان کی آخری فلم بھی تھی۔ یہاں یہ بات بھی ریکارڈ پر ہے کہ بڑے بڑے سپر سٹارز جن میں درپن ، اسلم پرویز ، محمدعلی ، وحیدمراد ، اعجاز ، حبیب ، یوسف خان ، اکمل ، سلطان راہی ، بدرمنیر ، شاہد اور عنایت حسین بھٹی وغیرہ نے سدھیر کے مقابل ثانوی کردار ادا کیے تھے جبکہ سنتوش ، کمال اور ندیم کے ساتھ وہ کسی فلم میں نہیں دیکھے گئے تھے۔

سدھیر خود پر گیت فلمبند کروانا پسند نہیں کرتے تھے۔ اس کی بڑی وجہ ان کا ایکشن فلمی ہیرو کا وہ امیج تھا جو جنگ و جدل کے لیے تو ایک آئیڈیل ہیرو تھا لیکن رومانٹک کرداروں اور گانا گانے والے ہیرو کے لیے موزوں نہیں تھا۔ سدھیر ، وحیدمراد کی ضد تھے اور یہی وجہ تھی جتنی تعداد میں انھوں نے فلموں میں کام کیا تھا ، اس تناسب سے ان پر فلمائے ہوئے گیتوں کی تعداد بہت کم ہے۔ سدھیر پر سب سے زیادہ سلیم رضا کے گائے ہوئے گیت فلمائے گئے تھے جبکہ یہ ایک عجیب اتفاق ہے کہ اب تک کے اعددوشمار کے مطابق عنایت حسین بھٹی ، منیر حسین اور مسعودرانا کے یکساں تعداد میں گیت سدھیر پر فلمائے گئے تھے جن میں سب سے سپر ہٹ گیت تو فلم ڈاچی (1964) کا تھا "ٹانگے ولا خیر منگدا۔۔" جبکہ مسعودرانا اور منیر حسین کا ایک اور شاہکار گیت "اے ماں ، پیاری ماں۔۔" (فلم وریام ، 1969) بھی سدھیر پر فلمایا گیاتھا۔

سدھیر اپنی مردانہ وجاہت کی وجہ سے صنف نازک کے لیے ایک خاص کشش رکھتے تھے ، یہی وجہ تھی کہ گھریلو بیوی ہونے کے باوجود اداکار شمی اور زیبا سے بھی شادی کی تھی۔ ان کا تعلق ایک پٹھان آفریدی قبیلے سے تھا ، لاہور میں پیدا ہوئے تھے اور وہیں 1997ء میں انتقال ہوا تھا۔


مسعودرانا اور سدھیر کے 12 فلمی گیت

5 اردو گیت ... 7 پنجابی گیت
1

ٹانگے والا خیر منگدا ، ٹانگہ لاہور دا ہووے تے بھاویں جھنگ دا....

فلم ... ڈاچی ... پنجابی ... (1964) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: جی اے چشتی ... شاعر: حزیں قادری ... اداکار: سدھیر
2

جیویں میرے دلدارا ، وے تیرے نال پیار کر کے..

فلم ... ابا جی ... پنجابی ... (1966) ... گلوکار: مالا ، مسعود رانا ... موسیقی: جی اے چشتی ... شاعر: حزیں قادری ... اداکار: نیلو ، سدھیر
3

نام میرا عبداللہ ، دیکھیے نہ گھور کے ، میں رنگیلا ، چھیل چھبیلا ، آیا ہوں دور سے..

فلم ... کافر ... اردو ... (1967) ... گلوکار: مسعود رانا ، احمد رشدی ... موسیقی: الیاس ... شاعر: اے کے مسرت ... اداکار: سدھیر ، رنگیلا
4

میرے گیت سن کر کہیں اے حسینہ ، محبت کا تجھ پر اثر ہو نہ جائے..

فلم ... کافر ... اردو ... (1967) ... گلوکار: مسعود رانا ، مالا ... موسیقی: الیاس ... شاعر: تنویر نقوی ... اداکار: سدھیر ، رانی
5

عجیب ہے یہ زندگی ، کبھی ہیں غم ، کبھی خوشی ، وہاں ہیں اب تباہیاں ، جہاں تھیں رونقیں کبھی..

فلم ... شعلہ اور شبنم ... اردو ... (1967) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: منظور اشرف ... شاعر: تنویر نقوی ... اداکار: (پس پردہ ، سدھیر ، شمیم آرا مع ساتھی)
6

تیرا رنگ گلابی ہے ، آنکھوں میں کجلے..

فلم ... شعلہ اور شبنم ... اردو ... (1967) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: منظور اشرف ... شاعر: تنویر نقوی ... اداکار: سدھیر
7

دن چہ پے جائے رات وے ماہیا ، کیویں سنائیے بات وے ماہیا..

فلم ... جانی دشمن ... پنجابی ... (1967) ... گلوکار: مالا ، مسعود رانا ... موسیقی: جی اے چشتی ... شاعر: بابا عالم سیاہ پوش ... اداکار: نغمہ، سدھیر
8

نکی جنی گل اتوں مکھ موڑ کے ، میرا دل توڑکے ، دلدار چلیا..

فلم ... پنڈ دی کڑی ... پنجابی ... (1968) ... گلوکار: مسعود رانا ، آئرن پروین ... موسیقی: بخشی وزیر ... شاعر: خواجہ پرویز ... اداکار: سدھیر ، فردوس
9

اے ماں ، اے ماں ، ساڈی بُلیاں چوں پھل کھڑدےنیں ، جدوں لینے آں تیرا ناں..

فلم ... وریام ... پنجابی ... (1969) ... گلوکار: مسعود رانا ، منیر حسین ... موسیقی: غلام حسین ، شبیر ... شاعر: اسماعیل متوالا ... اداکار: سدھیر ، حبیب
10

مستی بھرے ارمان ہیں ، کیا جانے کیا ہو..

فلم ... خون ناحق ... اردو ... (1969) ... گلوکار: آئرن پروین ، مسعود رانا ... موسیقی: بخشی وزیر ... شاعر: تنویر نقوی ... اداکار: رانی ، سدھیر
11

جند عذابےپئی ، کر کے بھیڑا دھندہ ، اپنا دشمن ، آپ اے بندہ..

فلم ... رنگو جٹ ... پنجابی ... (1970) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: ماسٹر عبد اللہ ... شاعر: سلیم کاشر ... اداکار: (پس پردہ ، سدھیر)
12

جی کردا ، جی کردا ، او سجنوں بھئی مترو ، کم ایخو جیا کر جائیے ، رہندی دنیا تک یاد آئیے..

فلم ... باغی تے فرنگی ... پنجابی ... (1976) ... گلوکار: مسعود رانا ، اخلاق احمد مع ساتھی ... موسیقی: غلام حسین ، شبیر ... شاعر: ارشد مرزا ... اداکار: مظہر شاہ ، چنگیزی ، سلطان راہی ، سدھیر مع ساتھی

مسعودرانا اور سدھیر کے 5 اردو گیت

1

نام میرا عبداللہ ، دیکھیے نہ گھور کے ، میں رنگیلا ، چھیل چھبیلا ، آیا ہوں دور سے ...

(فلم ... کافر ... 1967)
2

میرے گیت سن کر کہیں اے حسینہ ، محبت کا تجھ پر اثر ہو نہ جائے ...

(فلم ... کافر ... 1967)
3

عجیب ہے یہ زندگی ، کبھی ہیں غم ، کبھی خوشی ، وہاں ہیں اب تباہیاں ، جہاں تھیں رونقیں کبھی ...

(فلم ... شعلہ اور شبنم ... 1967)
4

تیرا رنگ گلابی ہے ، آنکھوں میں کجلے ...

(فلم ... شعلہ اور شبنم ... 1967)
5

مستی بھرے ارمان ہیں ، کیا جانے کیا ہو ...

(فلم ... خون ناحق ... 1969)

مسعودرانا اور سدھیر کے 7 پنجابی گیت

1

ٹانگے والا خیر منگدا ، ٹانگہ لاہور دا ہووے تے بھاویں جھنگ دا.. ...

(فلم ... ڈاچی ... 1964)
2

جیویں میرے دلدارا ، وے تیرے نال پیار کر کے ...

(فلم ... ابا جی ... 1966)
3

دن چہ پے جائے رات وے ماہیا ، کیویں سنائیے بات وے ماہیا ...

(فلم ... جانی دشمن ... 1967)
4

نکی جنی گل اتوں مکھ موڑ کے ، میرا دل توڑکے ، دلدار چلیا ...

(فلم ... پنڈ دی کڑی ... 1968)
5

اے ماں ، اے ماں ، ساڈی بُلیاں چوں پھل کھڑدےنیں ، جدوں لینے آں تیرا ناں ...

(فلم ... وریام ... 1969)
6

جند عذابےپئی ، کر کے بھیڑا دھندہ ، اپنا دشمن ، آپ اے بندہ ...

(فلم ... رنگو جٹ ... 1970)
7

جی کردا ، جی کردا ، او سجنوں بھئی مترو ، کم ایخو جیا کر جائیے ، رہندی دنیا تک یاد آئیے ...

(فلم ... باغی تے فرنگی ... 1976)

مسعودرانا اور سدھیر کے 4سولو گیت

1

ٹانگے والا خیر منگدا ، ٹانگہ لاہور دا ہووے تے بھاویں جھنگ دا.. ...

(فلم ... ڈاچی ... 1964)
2

عجیب ہے یہ زندگی ، کبھی ہیں غم ، کبھی خوشی ، وہاں ہیں اب تباہیاں ، جہاں تھیں رونقیں کبھی ...

(فلم ... شعلہ اور شبنم ... 1967)
3

تیرا رنگ گلابی ہے ، آنکھوں میں کجلے ...

(فلم ... شعلہ اور شبنم ... 1967)
4

جند عذابےپئی ، کر کے بھیڑا دھندہ ، اپنا دشمن ، آپ اے بندہ ...

(فلم ... رنگو جٹ ... 1970)

مسعودرانا اور سدھیر کے 7دوگانے

1

جیویں میرے دلدارا ، وے تیرے نال پیار کر کے ...

(فلم ... ابا جی ... 1966)
2

نام میرا عبداللہ ، دیکھیے نہ گھور کے ، میں رنگیلا ، چھیل چھبیلا ، آیا ہوں دور سے ...

(فلم ... کافر ... 1967)
3

میرے گیت سن کر کہیں اے حسینہ ، محبت کا تجھ پر اثر ہو نہ جائے ...

(فلم ... کافر ... 1967)
4

دن چہ پے جائے رات وے ماہیا ، کیویں سنائیے بات وے ماہیا ...

(فلم ... جانی دشمن ... 1967)
5

نکی جنی گل اتوں مکھ موڑ کے ، میرا دل توڑکے ، دلدار چلیا ...

(فلم ... پنڈ دی کڑی ... 1968)
6

اے ماں ، اے ماں ، ساڈی بُلیاں چوں پھل کھڑدےنیں ، جدوں لینے آں تیرا ناں ...

(فلم ... وریام ... 1969)
7

مستی بھرے ارمان ہیں ، کیا جانے کیا ہو ...

(فلم ... خون ناحق ... 1969)

مسعودرانا اور سدھیر کے 1کورس گیت

1جی کردا ، جی کردا ، او سجنوں بھئی مترو ، کم ایخو جیا کر جائیے ، رہندی دنیا تک یاد آئیے ... (فلم ... باغی تے فرنگی ... 1976)


Masood Rana & Sudhir: Latest Online film

Tahadi Izzat Da Sawal A

(Punjabi - Black & White - Thursday, 11 December 1969)


Masood Rana & Sudhir: Film posters
DachiMama JiMujahidMann MoujiJokerMoajzaAbba JiHukumatKafirShola Aur ShabnamJani DushmanMedanPind Di KurriEk Hi RastaHar Fun MoulaVeryamKhoon-e-NahaqTahadi Izzat Da Sawal ARangu JattSher PuttarYaar BadshahIshq Bina Ki JeenaIk Doli 2 KaharPuttar Da PyarNizam2 RangeelayKhoon Da Badla KhoonNagri Daata DiZan, Zar Tay ZaminBol BachanDhan Jigra Maa DaReshma Jawan Ho GeyiWardatBaghi Tay FarangiMera Naam RajaAakhri Qurbani
Masood Rana & Sudhir:

13 joint Online films

(1 Urdu and 12 Punjabi films)

1.1965: Mann Mouji
(Punjabi)
2.1968: Pind Di Kurri
(Punjabi)
3.1969: Veryam
(Punjabi)
4.1969: Tahadi Izzat Da Sawal A
(Punjabi)
5.1970: Rangu Jatt
(Punjabi)
6.1971: Yaar Badshah
(Punjabi)
7.1971: Ishq Bina Ki Jeena
(Punjabi)
8.1974: Nagri Daata Di
(Punjabi)
9.1974: Teray Jehay Putt Jamman Manwa
(Punjabi)
10.1975: Dhan Jigra Maa Da
(Punjabi)
11.1975: Reshma Jawan Ho Geyi
(Punjabi)
12.1978: Mera Naam Raja
(Urdu)
13.1981: Aakhri Qurbani
(Punjabi)
Masood Rana & Sudhir:

Total 42 joint films

(9 Urdu and 32 Punjabi films)

1.1964: Dachi
(Punjabi)
2.1964: Mama Ji
(Punjabi)
3.1965: Mujahid
(Urdu)
4.1965: Mann Mouji
(Punjabi)
5.1966: Joker
(Urdu)
6.1966: Moajza
(Urdu)
7.1966: Abba Ji
(Punjabi)
8.1967: Hukumat
(Urdu)
9.1967: Kafir
(Urdu)
10.1967: Shola Aur Shabnam
(Urdu)
11.1967: Jani Dushman
(Punjabi)
12.1968: Medan
(Punjabi)
13.1968: Pind Di Kurri
(Punjabi)
14.1968: Jagg Beeti
(Punjabi)
15.1968: Ek Hi Rasta
(Urdu)
16.1968: Har Fun Moula
(Punjabi)
17.1969: Veryam
(Punjabi)
18.1969: Khoon-e-Nahaq
(Urdu)
19.1969: Tahadi Izzat Da Sawal A
(Punjabi)
20.1970: Rangu Jatt
(Punjabi)
21.1971: Sher Puttar
(Punjabi)
22.1971: Jor Jawana Da
(Punjabi)
23.1971: Yaar Badshah
(Punjabi)
24.1971: Ishq Bina Ki Jeena
(Punjabi)
25.1972: Ik Doli 2 Kahar
(Punjabi)
26.1972: Puttar Da Pyar
(Punjabi/Pashto double version)
27.1972: Yaar Nibhanday Yaarian
(Punjabi)
28.1972: Nizam
(Punjabi)
29.1972: 2 Rangeelay
(Punjabi)
30.1973: Khoon Da Badla Khoon
(Punjabi)
31.1973: Sohna Babul
(Punjabi)
32.1974: Nagri Daata Di
(Punjabi)
33.1974: Zan, Zar Tay Zamin
(Punjabi)
34.1974: Bol Bachan
(Punjabi)
35.1974: Teray Jehay Putt Jamman Manwa
(Punjabi)
36.1975: Dhan Jigra Maa Da
(Punjabi)
37.1975: Reshma Jawan Ho Geyi
(Punjabi)
38.1976: Wardat
(Punjabi)
39.1976: Baghi Tay Farangi
(Punjabi)
40.1978: Mera Naam Raja
(Urdu)
41.1981: Aakhri Qurbani
(Punjabi)
42.Unreleased: Takkar
(Punjabi)


Masood Rana & Sudhir: 12 songs

(5 Urdu and 7 Punjabi songs)

1.
Punjabi film
Dachi
from Saturday, 15 February 1964
Singer(s): Masood Rana, Music: G.A. Chishti, Poet: Hazin Qadri, Actor(s): Sudhir
2.
Punjabi film
Abba Ji
from Friday, 16 December 1966
Singer(s): Mala, Masood Rana, Music: G.A. Chishti, Poet: Hazin Qadri, Actor(s): Neelo, Sudhir
3.
Urdu film
Kafir
from Friday, 21 July 1967
Singer(s): Masood Rana, Mala, Music: Ilyas, Poet: Tanvir Naqvi, Actor(s): Sudhir, Rani
4.
Urdu film
Kafir
from Friday, 21 July 1967
Singer(s): Masood Rana, Ahmad Rushdi, Music: Ilyas, Poet: A.K. Musarrat, Actor(s): Sudhir, Rangeela
5.
Urdu film
Shola Aur Shabnam
from Friday, 15 September 1967
Singer(s): Masood Rana, Music: Manzoor Ashraf, Poet: Tanvir Naqvi, Actor(s): (Playback, Sudhir, Shamim Ara & Co.)
6.
Urdu film
Shola Aur Shabnam
from Friday, 15 September 1967
Singer(s): Masood Rana, Music: Manzoor Ashraf, Poet: Tanvir Naqvi, Actor(s): Sudhir
7.
Punjabi film
Jani Dushman
from Friday, 29 September 1967
Singer(s): Mala, Masood Rana, Music: G.A. Chishti, Poet: Baba Alam Siaposh, Actor(s): Naghma, Sudhir
8.
Punjabi film
Pind Di Kurri
from Tuesday, 2 January 1968
Singer(s): Masood Rana, Irene Parveen, Music: Bakhshi Wazir, Poet: Khawaja Parvez, Actor(s): Sudhir, Firdous
9.
Punjabi film
Veryam
from Friday, 16 May 1969
Singer(s): Masood Rana, Munir Hussain, Music: Ghulam Hussain, Shabbir, Poet: Ismael Matwala, Actor(s): Sudhir, Habib
10.
Urdu film
Khoon-e-Nahaq
from Friday, 25 July 1969
Singer(s): Irene Parveen, Masood Rana, Music: Bakhshi Wazir, Poet: Tanvir Naqvi, Actor(s): Rani, Sudhir
11.
Punjabi film
Rangu Jatt
from Friday, 25 September 1970
Singer(s): Masood Rana, Music: Master Abdullah, Poet: Saleem Kashar, Actor(s): (Playback, Sudhir)
12.
Punjabi film
Baghi Tay Farangi
from Friday, 23 July 1976
Singer(s): Masood Rana, Akhlaq Ahmad & Co., Music: Ghulam Hussain, Shabbir, Poet: Arshad Mirza, Actor(s): Mazhar Shah, Changezi, Sudhir, Sultan Rahi & Co.

Chacha Ji
Chacha Ji
(1967)
Jalway
Jalway
(2014)
Pani
Pani
(1964)



پاکستان فلم میگزین ۔۔۔ سنہری فلمی یادوں کا امین

پاکستان فلم میگزین ، پاکستانی فلموں ، فنکاروں ، گیتوں اور اہم فلمی معلومات پر مبنی انٹرنیٹ پر اپنی نوعیت کی اولین ، منفرد اور تاریخ ساز ویب سائٹ ہے جو 3 مئی 2000ء سے مسلسل اپ ڈیٹ ہورہی ہے۔ یہ ایک انفرادی کاوش ہے جو فارغ اوقات کا بہترین مشغلہ اور پاکستان کی فلمی تاریخ کو مرتب کرنے کا ایک انوکھا مشن بھی ہے۔

A website of Masood Rana

یہ بے مثل ویب سائٹ کبھی نہ بن پاتی اگر پاکستانی فلموں میں میرے آل ٹائم فیورٹ پلے بیک سنگر جناب مسعودرانا صاحب کے گیت نہ ہوتے۔ انھی کے گیتوں کی تلاش میں یہ عظیم الشان ویب سائٹ وجود میں آئی۔ 2020ء سے اس عظیم فنکار کی 25ویں برسی پر ایک ایسا شاندار خراج تحسین پیش کیا جارہا ہے کہ جو آج تک کبھی کسی دوسرے فنکار کو پیش نہیں کیا جا سکا۔ مسعودرانا کے ایک ہزار سے زائد فلمی گیتوں کے اردو/پنجابی ڈیٹابیس کے علاوہ ان کے ساتھی فنکاروں پر بھی بڑے تفصیلی معلوماتی مضامین لکھے جارہے ہیں۔ یہ سلسلہ اپنی تکمیل تک جاری رہے گا ، ان شاء اللہ۔۔!

تازہ ترین مضامین




Pakistan Film History

The first and largest website on Pakistani movies, music and artists with chronological film history since 1913, useful information's, facts & figures, milestones, filmo- & songographies, images, videos and Urdu/Punjabi articles on various film topics.



Griftari
Griftari
(1986)
Zakhmona
Zakhmona
(2017)
Goga
Goga
(1978)
Cake
Cake
(2018)



Artists database

Useful information's with detailed film records, milestones, videos, images etc..


Click on any category from the menu below and read more information's..



PAK Magazine is an individual effort to compile and preserve the Pakistan's political, film and media history.
All external links on this site are only for the informational and educational purposes, and therefor, I am not responsible for the content of any external site.