Masood Rana - مسعودرانا

مسعودرانا اور دیبو بھٹاچاریہ

دیبو بھٹا چاریہ ، ساٹھ کے عشرہ کی اردو فلموں کے ایک نامور موسیقار تھے جنہوں نے 1962ء کی فلم بنجارن سے لے کر 1969ء کی فلم پیار کی جیت تک مسلسل تیرہ فلموں میں مسعودرانا کے لئے تین درجن کے قریب گیت کمپوز کئے تھے۔

Deebo Bhatacharia

فلم بنجارن سے قبل دیبو نے چار فلموں کی موسیقی دی تھی لیکن کامیابی نہیں ملی تھی۔ اس طرح یہ فلم ان کے لئے بھی بریک تھرو ثابت ہوئی تھی۔ اس فلم کا سب سے مقبول گیت تو میڈم نورجہاں کا گایا ہوا تھا "نجانے کیسا سفر ہے میرا۔۔" اور یہی فلم ساٹھ کے عشرہ کی مقبول گلوکارہ آئرن پروین کی بھی پہلی بڑی فلم ثابت ہوئی۔ اس فلم میں دیبو نے مسعودرانا سے چار گیت گوائے تھے جن میں سے کوئی ایک بھی ہٹ گیت نہیں تھا لیکن مسعودرانا کی گائیکی نے موسیقی کے حلقوں کو چونکا دیا تھا۔ ایسی جاندار اور دلکش آواز اس سے قبل پاکستانی فلموں میں نہیں سنی گئی تھی۔ ان گیتوں میں ایک سولو گیت تھا "کہیں دل پہ نہ جادو کر جائے ، یہ مہربانی ، ارے توبہ.." جوقابل ذکر نہیں تھا لیکن اس دوگانے "او جنیا ، تورے حسن کے کارن ،اک دن ہو جائے رےتکرار.." میں ان کی آواز کی کوالٹی متاثر کن تھی۔ اس فلم کے دو کورس گیت بھی تھے جن میں مسعودرانا نے الاپ کے علاوہ مکھڑے بھی گائے تھے، ان میں جو مکھڑا بریک تھرو بنا اور جسے سن کر لوگ انہیں "پاکستانی رفیع" کہنے لگے تھے ، وہ "لچکے کمریا موری ، میں نازک چھوری۔۔ " میں تھا جو کچھ اس طرح سے تھاَ:

  • اس نگری میں سو دھوکے ہیں ، دیکھ کے چلیو رانی ، قدم قدم پہ جال بچھے ہیں ، نہ کریو نادانی۔۔
Shararat (!963)

1963ء میں مسعودرانا اور دیبو کی دوسری مشترکہ فلم اقبال شہزاد کی شرارت تھی جس کے ہدایتکار رفیق رضوی تھے۔ یہ فلم ، اردو فلموں کے عظیم اداکار محمد علی کی بطور ہیرو پہلی فلم تھی اور ان کی ہیروئنیں بہار اور لیلیٰ تھیں۔ اس سے قبل وہ فلموں میں منفی کردار کیا کرتے تھے۔ بتایا جاتا ہے کہ اس فلم میں گائے ہوئے مسعودرانا کے چاروں گیت جو نغمہ نگار مسرورانور کے لکھے ہوئے تھے ، وہ محمد علی پر فلمائے گئے تھے ، ان میں سے سب سے مقبول گیت جو اصل میں ایک شوخ انداز کی غزل تھی اور جسےمعروف گلوکار مجیب عالم نے ایک ٹی وی پروگرام میں گا کر مسعودرانا کو خراج تحسین بھی پیش کیا تھا ، وہ تھا:

اس فلم کے یہ دو رومانٹک گیت بھی بڑے پسند کئے گئے تھےَ:

اسی سال دیبو نے ہدایتکار حسن طارق کی فلم قتل کے بعد میں پہلی بار پاکستانی فلمی تاریخ کے دو چوٹی کے گلوکاروں ، مسعودرانا اور احمد رشدی کو یکجا کیا تھا۔ اس فلم کا یہ گیت بڑا دلکش تھا "او جان من ، ذرا رک جا ، یہ ادا نہ ہم کو دکھا۔۔ " اس گیت کا رومانٹک حصہ مسعودرانا کی دلکش آواز میں تھا جو فلم کے ہیرو کمال پر فلمایا گیا تھا جبکہ کامیڈی حصہ احمد رشدی کی شوخ آواز میں تھا جو مزاحیہ اداکار لہری پر فلمایا گیا تھا۔ اس گیت میں تیسری آواز آئرن پروین کی تھی جو بیک وقت فلم کی ہیروئن نیلو اور کسی مزاحیہ اداکارہ پر فلمائی گئی تھی۔اس فلم کاسب سے مقبول گیت میڈم نورجہاں کی آواز میں تھا "مجھے چاند سے ڈر سا لگتا ہے۔۔"

1963ء ہی میں ریلیز ہونے والی ہدایتکار حسن طارق کی فلم شکوہ کے موسیقار حسن لطیف تھے لیکن چند گیت دیبو بھٹا چاریہ کے تھے جن میں مسعودرانا کی آواز میں بھی ایک گیت تھا " مکھڑے کو چھپانے کی ادا لے گئی دل کو۔۔ "

1964ء کی فلم بیٹی میں دیبو نے مسعودرانا سے پہلی بار کسی اردو فلم کےلئے تھیم سانگ ریکارڈ کروایا تھا:

Beti

یہ ایک انتہائی پر اثر گیت تھا جو فلم کے مرکزی کردار چائلڈ سٹار گٹو کے لئے گایا گیا تھا اور جس کی موسیقی کے ناقدین نے دل کھول کر تعریف کی تھی۔ اس سے قبل مسعودرانا ، اسی سال کی پنجابی فلم بھرجائی میں اپنا پہلا تھیم سانگ گا چکے تھے۔آواز میں قدرتی سوزوگداز اور غم و الم کے جذبات و احساسات کے فطری اظہار کے علاوہ اونچی سروں میں گانے کی خصوصیت نے انہیں تاحیات ٹائٹل اور تھیم سانگز کا سب سے بہترین گلوکار بنا دیا تھا۔

فلم بیٹی میں دیبو نے اداکارہ نیلو کے لئے گلوکارہ نسیم بیگم سے ایک کلاسیکل گیت بھی گوایا تھا "چھن چھنا چھن بچھوا بولے ، کنگناں ڈولے.." جس میں مسعودرانا کا الاپ تھا جو اداکار امداد حسین پر فلمایا گیا تھا۔ اس کے علاوہ ایک مزاحیہ کورس گیت بھی تھا جس میں مسعودرانا کے علاوہ احمد رشدی اور روبینہ بدر بھی تھے:

1965ء میں دیبو کی فلم آرزو ریلیز ہوئی تھی۔ یہ بطور ہیرو اداکار حنیف کی واحد کامیاب فلم تھی۔ حنیف کی شکل دلیپ کمار سے ملتی تھی لیکن اداکاری میں بڑے کمزور تھے۔ ہیرو سے شروع ہوئے تھے ، معاون اداکار سے ایکسٹرا اداکار بن کر رہ گئے تھے۔ اس فلم میں دیبو نے مسعودرانا کے لئے تین گیت تھے جن میں یہ گیت سپر ہٹ گیت تھا:

جب ریڈیو پر یہ گیت بجتا تھا تو میرے لئے وقت ساکت سا ہوجاتا تھا اور بڑی حیرت ہوتی تھی کہ کوئی اتنے اونچے سروں میں بھی گا سکتا ہے۔ مجھے اونچی سروں کی گائیکی میں مسعودرانا سے زیادہ کبھی کسی گلوکار نے متاثر نہیں کیا اور ایسے گیتوں کے دوران میں ان کی آواز کے سحر اور زیروبم میں کھو جایا کرتا تھا۔ اس فلم کا یہ گیت بھی بڑا زبردست تھا "آرزو کا رنگ بھر کر ، دل کا افسانہ کہو.."

1966ء میں دیبو کی دو فلمیں ریلیز ہوئی تھیں اور ان دونوں فلموں میں مسعودرانا کے آٹھ گیت تھے۔ ان میں پہلی فلم ہدایتکار حسن طارق کی تقدیر تھی جس میں یہ دو سنجیدہ گیت بڑے اعلیٰ پائے کے تھے:

جبکہ نشہ کی کیفیت میں گایا ہوا یہ گیت "یہ کیسا نشہ ہے ، میں کس عجب خمار میں ہوں۔۔ " ایک بے مثل گیت تھا ، مسعودرانا کے گائے ہوئے ڈیڑھ درجن کے قریب نشے کے گیتوں میں سے یہ میرا پسندیدہ ترین گیت ہے جس کی گائیکی اور تاثرات لاجواب تھے۔

اسی سال ریلیز ہونے والی دیبو کے فلمی کیرئر کی سب سے بڑی نغماتی فلم بدنام تھی جس کے سبھی گیت مقبول ہوئے تھے۔ اس فلم میں ثریا ملتانیکر کی ایک غزل نے دھوم مچا دی تھی "بڑے بے مروت ہیں یہ حسن والے ، کہیں دل لگانے کی کوشش نہ کرنا۔۔" یہ ایک ریڈیو کی غزل تھی جسے دیبو نے کمال مہارت سے فلمی انگ میں ڈھالا تھا۔ بتایا جاتا ہے کہ محض اس ایک گیت کی رائلٹی سے فلم بدنام کے جملہ اخراجات پورے ہو گئے تھے۔ اس فلم میں دیبو نےمسعودرانا جیسے ہر فن مولا گلوکار سے چار مختلف النوع گیت گوائے تھے۔ فلم کا تھیم سانگ شاید واحد گیت تھا کہ جس کی اتنی طویل استھائی تھی:

Badnam

یہ دنیا
میت رے
راہ گذر ہے
اور
ہم بھی مسافر ، تم بھی مسافر
کون کسی کا ہووے
کاہے چپ چپ رووے
کوئی ساتھ دے کہ نہ ساتھ دے
یہ سفر اکیلے ہی کاٹ لے
کہ ہم بھی مسافر تم بھی مسافر
کون کسی کا ہووے
اس گیت کا جو ریڈیو ورژن تھا ، فلمی ورژن اس سے مختلف تھا اور اس میں فلم کی ڈرامائی صورتحال کے مطابق تبدیلی کی گئی تھی۔ مسعودرانا چونکہ واحد مکمل فلمی گلوکار تھے ، اس لئے ان کے بہت سے ایسے گیت ملتے ہیں جو صرف فلمی صورتحال کے مطابق گائے جاتے تھے۔ اس فلم کا دوسرا گیت ایک انتہائی دلکش دھیمی سروں میں گایا ہوا رومانٹک گیت تھا جو اداکار اعجاز پر فلمایا گیا تھا:

اس فلم میں تیسرا گیت ایک سنجیدہ رومانٹک گیت تھا جو مسعودرانا کے ساتھ آئرن پروین نے گایا تھا اور فلم میں اعجاز اور نیلو پر فلمایا گیا تھا " اک اور بات مانی ، اک اور زخم کھایا ، خود ہم نے اپنے ہاتھوں دل کا دیا جلایا۔۔ "

فلم بدنام میں دیبونے ایک مزاحیہ کورس گیت بھی کمپوز کیا تھا "بہت بے آبرو ہو کر تیرے کوچے سے ہم نکلے.." اس کورس گیت میں نمایاں آوازیں مسعودرانا ، شوکت علی اور امداد حسین کی تھیں لیکن ایک نام سلامت علی کا بھی تھا۔ اب یہ معلوم نہیں کہ یہ صاحب کون تھے۔۔؟ استاد سلامت علی خان تو ہو نہیں سکتے تھے جو کلاسیکی موسیقی کا ایک بہت بڑا نام تھے اور جن سے مسعودرانا بھی بے حد متاثر تھے اور انہیں وقت کا تان سین کہتے تھے۔ ایک غزل گو گلوکار سلامت علی بھی تھے لیکن یہ کنفرم نہیں ہے کہ اس گیت کے سلامت علی کون تھے۔۔؟

1967ء میں دیبو نے دو فلموں کی موسیقی ترتیب دی تھی اور ان میں مسعودرانا سے چار گیت گوائے تھے۔ فلم بہادر میں "اے جان غزل ، لہرا کے نہ چل ، دلبر ، میرا دل تڑپا کے نہ چل۔۔ " بڑا دلکش گیت تھا جس میں آئرن پروین بھی تھی اور یہ گیت درپن پر فلمایا گیا تھا اور ساتھ میں مسرت نذیر بھی تھی جس کی یہ آخری فلم تھی۔ اسی سال کی فلم میرے بچے میری آنکھیں کے دونوں گیت بھی بڑے کمال کے تھے "یاد کرو ہمدم ، وہ پیار بھرا موسم۔۔ " اور "میرا یار ہے ایسا یاروں میں۔۔ "

1968ء میں دیبو نے دو فلموں کی موسیقی دی تھی، ان میں ایک فلم ایک ہی راستہ تھی جس میں مسعودرانا کے دو گیت تھے۔ ان میں ایک ملی ترانہ تھاَ جو بڑا متاثر کن تھا " اے وطن کی سر زمین ، تیرا ہر ذرہ حسین۔۔ " جبکہ دوسرا ایک کلاسیکل گیت تھا "گر گئی مورے ماتھے کی بندیا۔۔" جس میں مسعودرانا نے میڈم نورجہاں کی سنگت کی تھی اور یہ آوازیں رانی اور امداد حسین پر فلمائی گئی تھیں۔

Samundar

اس سال کی دوسری فلم سمندر تھی جو اردو فلموں کے سپر سٹار وحید مراد کی بطور ہیرو اور فلمساز کراچی میں بننے والی ایک اوسط درجے کی فلم تھی۔ اس فلم کی خاص بات یہ تھی کہ اس میں مشرقی پاکستان کی مشہور اداکارہ شبنم نے پہلی بار مغربی پاکستان کی کسی فلم میں کام کیا تھا۔ ان دنوں وحید مراد کی جوڑی احمد رشدی کے ساتھ بڑی مقبول تھی ، اس لئے دیبو سے ڈیمانڈ کی گئی تھی فلم کے تمام گیت رشدی صاحب ہی گائیں گے۔ دیبو نے ڈیمانڈ کے مطابق مال سپلائی کیا تھا لیکن فلم کے کورس گیت تیرا میرا ساتھی ہے لہراتا سمندر۔۔" میں اپنے فیورٹ گلوکار مسعودرانا کو شامل کرنے سے باز نہ رہ سکے تھے۔ ویسے بھی احمد رشدی ہلکے پھلکے گیتوں کے گلوکار تھے ، اونچی سروں میں گانا ان کے لئے ممکن نہیں تھا۔ یہ کورس گیت سن کر اندازہ ہوتاتھا کہ جہاں احمد رشدی کی سُرختم ہوتی تھی وہاں سے مسعودرانا کی سُر شروع ہوتی تھی۔ مجھے یہ فلم یاد نہیں لیکن بتایا جاتا ہے کہ اس کا ایک سلوموشن ورژن بھی تھا جس میں مسعودرانا کے ساتھ وحید مراد کی آواز شامل تھی۔

1969ء میں دیبو کی صرف ایک ہی فلم پیار کی جیت ریلیز ہوئی تھی جو بری طرح سے ناکام رہی تھی۔ اس فلم کے ہیرو عابد قریشی تھے جو اداکارہ افشاں قریشی کے شوہر اور ٹی وی اداکار فیصل قریشی کے والد تھے۔ اس فلم میں انہوں نے اپنی بھابھی روزینہ کے ساتھ ہیرو کا رول کیا تھا اور ان پر مسعودرانا اور آئرن پروین کا یہ دلکش رومانٹک گیت فلمایاگیا تھا "چاند بھی سامنے آتے ہوئے شرماتا ہے۔۔ "

1970ء میں دیبو نے فلم ہنی مون میں معاون موسیقار کی حیثیت سے کام کیا تھا ، اس لئے معلوم نہیں کہ کون سا گیت ان کا تھا البتہ اس فلم میں بھی مسعودرانا کے دو گیت تھے۔ اسی سال کی ایک فلم چاند سورج کی پس پردہ موسیقی دیبو نے دی تھی۔ اس سے قبل انہوں نے فلم میں زندہ ہوں (1968) کی بیک گراؤنڈ موسیقی بھی دی تھی۔

Deebo Bhatacharia

1971ء کی پنجابی فلم بازیگر میں بطور موسیقار دیبو کا نام ملتا ہے۔ اگر یہ درست ہے تو اس فلم میں رونا لیلیٰ کا ایک سپر ہٹ گیت تھا: "نی سیو ، کونج وچھڑ گئی ڈھاروں تے لبھدی سجناں نوں۔۔"

ان کے علاوہ دیبو کے کریڈٹ پر تین فلمیں اور بھی تھیں ، جھک گیا آسمان (1970) ، ٹائیگر گینگ اور دل والے (1974) جبکہ ایک غیرریلیز شدہ فلم جلتے ارمان بجھتے دیپ کا حوالہ بھی ملتا ہے جس میں دیبو نے مہدی حسن سے ایک سپر ہٹ گیت گوایا تھاَ "تنہا تھی اور ہمیشہ سے تنہا ہے زندگی۔۔" اس فلم میں مسعودراناکاآئرن پروین کے ساتھ یہ دوگانا بھی تھا "نگاہیں بچا کر کہاں جائیے گا۔۔ "

دیبو ، بنگالی النسل اور ہندو مذہب سے تعلق رکھتے تھے۔ 1956ء کی فلم انوکھی کی موسیقی ترتیب دینے کے لئے موسیقار تمر برن کے ساتھ کراچی آئے تھے اور پھر یہیں کے ہو کر رہ گئے تھے۔ فلم بنجارن سے قبل انہوں نے چار فلموں مسکہ پالش (1957) ، یہ دنیا (1960) ، ہم ایک ہیں اور لاکھوں فسانے (1961) کی موسیقی دی تھی۔ سقوط ڈھاکہ کے بعد واپس چلے گئے تھے۔


مسعودرانا اور دیبو کے 34 فلمی گیت

34 اردو گیت ... 0 پنجابی گیت
1
فلم ... بنجارن ... اردو ... (1962) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: دیبو ... شاعر: فیاض ہاشمی ... اداکار: کمال
2
فلم ... بنجارن ... اردو ... (1962) ... گلوکار: مسعود رانا ، آئرن پروین ... موسیقی: دیبو ... شاعر: فیاض ہاشمی ... اداکار: کمال ، نیلو
3
فلم ... بنجارن ... اردو ... (1962) ... گلوکار: مسعود رانا ، آئرن پروین مع ساتھی ... موسیقی: دیبو ... شاعر: مسرور انور ... اداکار: نرالا ، نیلو
4
فلم ... بنجارن ... اردو ... (1962) ... گلوکار: مسعود رانا ، آئرن پروین مع ساتھی ... موسیقی: دیبو ... شاعر: حمایت علی شاعر ... اداکار: نرالا ، نیلو مع ساتھی
5
فلم ... شکوہ ... اردو ... (1963) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: دیبو ... شاعر: منیر نیازی ... اداکار: درپن
6
فلم ... شرارت ... اردو ... (1963) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: دیبو ... شاعر: مسرور انور ... اداکار: محمد علی
7
فلم ... شرارت ... اردو ... (1963) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: دیبو ... شاعر: مسرور انور ... اداکار: محمد علی
8
فلم ... شرارت ... اردو ... (1963) ... گلوکار: مسعود رانا ، آئرن پروین ... موسیقی: دیبو ... شاعر: مسرور انور ... اداکار: محمد علی ، ؟
9
فلم ... شرارت ... اردو ... (1963) ... گلوکار: مسعود رانا ، آئرن پروین ... موسیقی: دیبو ... شاعر: مسرور انور ... اداکار: محمد علی ، ؟
10
فلم ... قتل کے بعد ... اردو ... (1963) ... گلوکار: مسعود رانا ، احمد رشدی ، آئرن پروین ... موسیقی: دیبو ... شاعر: مشیر کاظمی ... اداکار: کمال ، لہری ، نیلو
11
فلم ... بیٹی ... اردو ... (1964) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: دیبو ... شاعر: فیاض ہاشمی ... اداکار: (پس پردہ ، گٹو)
12
فلم ... بیٹی ... اردو ... (1964) ... گلوکار: مسعود رانا ، احمد رشدی ، آئرن پروین ، روبینہ بدر مع ساتھی ... موسیقی: دیبو ... شاعر: فیاض ہاشمی ... اداکار: دلجیت مرزا ، رنگیلا ، ارسلان ، گٹو مع ساتھی
13
فلم ... بیٹی ... اردو ... (1964) ... گلوکار: نسیم بیگم ، مسعود رانا ... موسیقی: دیبو ... شاعر: فیاض ہاشمی ... اداکار: نیلو ، امداد حسین
14
فلم ... آرزو ... اردو ... (1965) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: دیبو ... شاعر: واجد چغتائی ... اداکار: حنیف
15
فلم ... آرزو ... اردو ... (1965) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: دیبو ... شاعر: واجد چغتائی ... اداکار: حنیف
16
فلم ... آرزو ... اردو ... (1965) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: دیبو ... شاعر: واجد چغتائی ... اداکار: حنیف
17
فلم ... تقدیر ... اردو ... (1966) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: دیبو ... شاعر: فیاض ہاشمی ... اداکار: سنتوش
18
فلم ... تقدیر ... اردو ... (1966) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: دیبو ... شاعر: فیاض ہاشمی ... اداکار: سنتوش
19
فلم ... تقدیر ... اردو ... (1966) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: دیبو ... شاعر: منیر نیازی ... اداکار: سنتوش
20
فلم ... تقدیر ... اردو ... (1966) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: دیبو ... شاعر: فیاض ہاشمی ... اداکار: (پس پردہ ، سنتوش)
21
فلم ... بد نام ... اردو ... (1966) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: دیبو ... شاعر: حمایت علی شاعر ... اداکار: علاؤالدین
22
فلم ... بد نام ... اردو ... (1966) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: دیبو ... شاعر: مسرور انور ... اداکار: اعجاز
23
فلم ... بد نام ... اردو ... (1966) ... گلوکار: مسعود رانا ، آئرن پروین ... موسیقی: دیبو ... شاعر: مسرور انور ... اداکار: اعجاز ، نیلو
24
فلم ... بد نام ... اردو ... (1966) ... گلوکار: مسعود رانا ، شوکت علی ، سلامت علی ، امداد حسین مع ساتھی ... موسیقی: دیبو ... شاعر: تنویر نقوی ... اداکار: اعجاز ، البیلا ، ارسلان ، اعجاز اختر مع ساتھی
25
فلم ... بہادر ... اردو ... (1967) ... گلوکار: مسعود رانا ، آئرن پروین ... موسیقی: دیبو ... شاعر: فیاض ہاشمی ... اداکار: درپن ، مسرت نذیر
26
فلم ... بہادر ... اردو ... (1967) ... گلوکار: مسعود رانا ، آئرن پروین ... موسیقی: دیبو ... شاعر: فیاض ہاشمی ... اداکار: نذر ، لہری ، پنا
27
فلم ... میرے بچے میری آنکھیں ... اردو ... (1967) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: دیبو ... شاعر: مسرور انور ... اداکار: کمال
28
فلم ... میرے بچے میری آنکھیں ... اردو ... (1967) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: دیبو ... شاعر: مسرور انور ... اداکار: نرالا
29
فلم ... سمندر ... اردو ... (1968) ... گلوکار: احمد رشدی ، مسعود رانا ، سائیں اختر مع ساتھی ... موسیقی: دیبو ... شاعر: صہبا اختر ... اداکار: وحید مراد، حنیف مع ساتھی
30
فلم ... سمندر ... اردو ... (1968) ... گلوکار: مسعود رانا ، وحید مراد ... موسیقی: دیبو ... شاعر: صہبا اختر ... اداکار: وحید مراد
31
فلم ... ایک ہی راستہ ... اردو ... (1968) ... گلوکار: مسعود رانا ... موسیقی: دیبو ... شاعر: تنویر نقوی ... اداکار: (پس پردہ ، ٹائٹل سانگ ، تھیم سانگ )
32
فلم ... ایک ہی راستہ ... اردو ... (1968) ... گلوکار: مسعود رانا ، نورجہاں ... موسیقی: دیبو ... شاعر: مسرور انور ... اداکار: امداد حسین ، رانی
33
فلم ... پیار کی جیت ... اردو ... (1969) ... گلوکار: آئرن پروین ، مسعود رانا ... موسیقی: دیبو ... شاعر: واجد چغتائی ... اداکار: ؟
34
فلم ... جلتے ارمان بجھتے دیپ ... اردو ... (غیر ریلیز شدہ) ... گلوکار: آئرن پروین ، مسعود رانا ... موسیقی: دیبو ... شاعر: صہبا اختر ... اداکار: ؟

مسعودرانا اور دیبو کے 17سولو گیت

1کہیں دل پہ نہ جادو کر جائے ، یہ مہربانی ، ارے توبہ ... (فلم ... بنجارن ... 1962)
2مکھڑے کو چھپانے کی ادا لے گئی دل کو ... (فلم ... شکوہ ... 1963)
3اے دل ، تجھے اب ان سے ، یہ کیسی شکایت ہے ، وہ سامنے بیٹھےہیں ، کافی یہ عنایت ہے ... (فلم ... شرارت ... 1963)
4تیرے شباب کا، اے جان جان، جواب کہاں ... (فلم ... شرارت ... 1963)
5ایسے بھی معصوم ہیں اس دنیا میں جانے کتنے ، جن کا جرم نہیں ہے کوئی ، پھر بھی لوگ سزا دیتے ہیں ... (فلم ... بیٹی ... 1964)
6میں تو سمجھا تھا ، جدائی تیری ممکن ہی نہیں ، موت بھی آئے گی تو زانو پہ تیرے آئے گی ... (فلم ... آرزو ... 1965)
7آرزو کا رنگ بھر کر ، دل کا افسانہ کہو ... (فلم ... آرزو ... 1965)
8اجڑ چکی ہے جو دل کی محفل ، اس کی یادوں میں ... (فلم ... آرزو ... 1965)
9ہم شہر وفا کے لوگوں کو تقدیر نے اکثرلوٹا ہے ... (فلم ... تقدیر ... 1966)
10یہ دنیا وہ محفل ہے جہاں ، ماتم بھی ہے ، نغمہ بھی ہے ... (فلم ... تقدیر ... 1966)
11یہ کیسا نشہ ہے ، میں کس عجب خمار میں ہوں ، تو آکے جا بھی چکا ہے ، میں انتظار میں ہوں ... (فلم ... تقدیر ... 1966)
12جان کا مالک اوپر بیٹھا ، کرے حفاظت جان کی ... (فلم ... تقدیر ... 1966)
13یہ دنیا ، میت رے ، راہ گذر ہے اور ہم بھی مسافر تم بھی مسافر، کون کسی کا ہووے ... (فلم ... بد نام ... 1966)
14ابھی تو دل میں ہلکی سی خلش محسوس ہوتی ہے ، بہت ممکن ہے کل اس کا ، محبت نام ہو جائے ... (فلم ... بد نام ... 1966)
15یاد کرو ہمدم ، وہ پیار بھرا موسم ، کہ جب دل سے دل ملے تھے ، ہم پہلی بار ملے تھے ... (فلم ... میرے بچے میری آنکھیں ... 1967)
16میرا یار ہے ایسا یاروں میں ، جیسے ہو چاند ستاروں میں ... (فلم ... میرے بچے میری آنکھیں ... 1967)
17اے وطن کی سر زمین ، تیرا ہر ذرہ حسین ، بات جو تجھ میں ہے وہ ، ساری دنیا میں نہیں ... (فلم ... ایک ہی راستہ ... 1968)

مسعودرانا اور دیبو کے 11دو گانے

1او جنیا ، تورے حسن کے کارن ،اک دن ہو جائے رےتکرار ... (فلم ... بنجارن ... 1962)
2برا مان کر کہاں چل دیئے ، یہ تو عشق والوں کا فرض ہے ، آداب عرض ہے ... (فلم ... شرارت ... 1963)
3گلی گلی میں دل بیچوں ، ہے نام میرا دلدار ، پیار ملے گا اتنا سستا کہاں میری سرکار ... (فلم ... شرارت ... 1963)
4چھن چھنا چھن بچھوا بولے ، کنگناں ڈولے ... (فلم ... بیٹی ... 1964)
5اک اور بات مانی ، اک اور زخم کھایا ، خود ہم نے اپنے ہاتھوں دل کا دیا جلایا ... (فلم ... بد نام ... 1966)
6اے جان غزل ، لہرا کے نہ چل ، دلبر ، میرا دل تڑپا کے نہ چل ... (فلم ... بہادر ... 1967)
7قدموں میں تیرے بچھا دوں، میں تیرے لئے سر کو کٹا دوں ... (فلم ... بہادر ... 1967)
8تیرا میرا ساتھی ہے لہراتا سمندر ... (فلم ... سمندر ... 1968)
9گر گئی مورے ماتھے کی بندیا ، کیا کہے گی اب ساس ناندیا ، من ہرجائی تھا بڑا نٹ کھٹ ... (فلم ... ایک ہی راستہ ... 1968)
10چاند بھی سامنے آتے ہوئے شرماتا ہے ... (فلم ... پیار کی جیت ... 1969)
11نگاہیں بچا کر کہاں جائیے گا ... (فلم ... جلتے ارمان بجھتے دیپ ... غیر ریلیز شدہ)

مسعودرانا اور دیبو کے 6کورس گیت

1لچکے کمریا موری ، میں نازک چھوری ، کہ ہائے ہائے مجھ سے چلا نہ جائے ... (فلم ... بنجارن ... 1962)
2پٹ گھونگھٹ کے کھولے کھولے ، تو آجا بابو جی ... (فلم ... بنجارن ... 1962)
3او جان من ، ذرا رک جا ، یہ ادا نہ ہم کو دکھا ... (فلم ... قتل کے بعد ... 1963)
4دنیا ریل گاڑی ، ہے سانپ کی سواری ، جو سمجھے وہ کھلاڑی ، نہ سمجھے وہ اناڑی ، بھیا ... (فلم ... بیٹی ... 1964)
5بہت بے آبرو ہو کر تیرے کوچے سے ہم نکلے ... (فلم ... بد نام ... 1966)
6ساتھی ، تیرا میرا ساتھی ہے لہراتا سمندر ، ہم بیٹے ہیں سمندر کے ... (فلم ... سمندر ... 1968)

Masood Rana & Deebo: Latest Online film

Masood Rana & Deebo: Film posters
BanjaranShikwaShararatQatal Kay BaadBetiAarzooTaqdeerBadnamBahadurMeray Bachay Meri AnkhenSamundarEk Hi RastaHoneymoon
Masood Rana & Deebo:

0 joint Online films

(0 Urdu and 0 Punjabi films)

Masood Rana & Deebo:

Total 15 joint films

(15 Urdu, 0 Punjabi films)

1.1962: Banjaran
(Urdu)
2.1963: Shikwa
(Urdu)
3.1963: Shararat
(Urdu)
4.1963: Qatal Kay Baad
(Urdu)
5.1964: Beti
(Urdu)
6.1965: Aarzoo
(Urdu)
7.1966: Taqdeer
(Urdu)
8.1966: Badnam
(Urdu)
9.1967: Bahadur
(Urdu)
10.1967: Meray Bachay Meri Ankhen
(Urdu)
11.1968: Samundar
(Urdu)
12.1968: Ek Hi Rasta
(Urdu)
13.1969: Pyar Ki Jeet
(Urdu)
14.1970: Honeymoon
(Urdu)
15.Unreleased: Jaltay Arman Bujhtay Deep
(Urdu)


Masood Rana & Deebo: 34 songs

(34 Urdu and 0 Punjabi songs)

1.
Urdu film
Banjaran
from Friday, 14 September 1962
Singer(s): Masood Rana, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Kemal
2.
Urdu film
Banjaran
from Friday, 14 September 1962
Singer(s): Masood Rana, Irene Parveen, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Nirala, Neelo
3.
Urdu film
Banjaran
from Friday, 14 September 1962
Singer(s): Masood Rana, Irene Parveen, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Kemal, Neelo
4.
Urdu film
Banjaran
from Friday, 14 September 1962
Singer(s): Masood Rana, Irene Parveen & Co., Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Nirala, Neelo & Co.
5.
Urdu film
Shikwa
from Friday, 5 April 1963
Singer(s): Masood Rana, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Darpan
6.
Urdu film
Shararat
from Friday, 26 July 1963
Singer(s): Masood Rana, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Mohammad Ali
7.
Urdu film
Shararat
from Friday, 26 July 1963
Singer(s): Masood Rana, Irene Parveen, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Mohammad Ali, ?
8.
Urdu film
Shararat
from Friday, 26 July 1963
Singer(s): Masood Rana, Irene Parveen, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Mohammad Ali, ?
9.
Urdu film
Shararat
from Friday, 26 July 1963
Singer(s): Masood Rana, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Mohammad Ali
10.
Urdu film
Qatal Kay Baad
from Friday, 22 November 1963
Singer(s): Masood Rana, Ahmad Rushdi, Irene Parveen, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Kemal, Lehri, Neelo
11.
Urdu film
Beti
from Friday, 31 July 1964
Singer(s): Masood Rana, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): (Playback - Gutto)
12.
Urdu film
Beti
from Friday, 31 July 1964
Singer(s): Naseem Begum, Masood Rana, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Neelo, Imdad Hussain
13.
Urdu film
Beti
from Friday, 31 July 1964
Singer(s): Masood Rana, Ahmad Rushdi, Irene Parveen, Robina Badar & Co., Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Diljeet Mirza, Rangeela, Arslan, Gutto & Co.
14.
Urdu film
Aarzoo
from Friday, 1 October 1965
Singer(s): Masood Rana, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Hanif
15.
Urdu film
Aarzoo
from Friday, 1 October 1965
Singer(s): Masood Rana, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Hanif
16.
Urdu film
Aarzoo
from Friday, 1 October 1965
Singer(s): Masood Rana, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Hanif
17.
Urdu film
Taqdeer
from Friday, 29 July 1966
Singer(s): Masood Rana, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Santosh
18.
Urdu film
Taqdeer
from Friday, 29 July 1966
Singer(s): Masood Rana, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): (Playback - Santosh)
19.
Urdu film
Taqdeer
from Friday, 29 July 1966
Singer(s): Masood Rana, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Santosh
20.
Urdu film
Taqdeer
from Friday, 29 July 1966
Singer(s): Masood Rana, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Santosh
21.
Urdu film
Badnam
from Friday, 2 September 1966
Singer(s): Masood Rana, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Ejaz
22.
Urdu film
Badnam
from Friday, 2 September 1966
Singer(s): Masood Rana, Shoukat Ali, Salamat Ali, Imdad Hussain & Co., Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Ejaz, Albela, Arsalan, Ijaz Akhtar & Co.
23.
Urdu film
Badnam
from Friday, 2 September 1966
Singer(s): Masood Rana, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Allauddin
24.
Urdu film
Badnam
from Friday, 2 September 1966
Singer(s): Masood Rana, Irene Parveen, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Ejaz, Neelo
25.
Urdu film
Bahadur
from Thursday, 12 January 1967
Singer(s): Masood Rana, Irene Parveen, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Darpan, Musarrat Nazir
26.
Urdu film
Bahadur
from Thursday, 12 January 1967
Singer(s): Masood Rana, ?, Irene Parveen, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Nazar, Lehri, Panna
27.
Urdu film
Meray Bachay Meri Ankhen
from Friday, 9 June 1967
Singer(s): Masood Rana, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Nirala
28.
Urdu film
Meray Bachay Meri Ankhen
from Friday, 9 June 1967
Singer(s): Masood Rana, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Kemal
29.
Urdu film
Samundar
from Sunday, 10 March 1968
Singer(s): Ahmad Rushdi, Masood Rana, Sain Akhtar & Co., Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Waheed Murad, Hanif & Co.
30.
Urdu film
Samundar
from Sunday, 10 March 1968
Singer(s): Masood Rana, Waheed Murad, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Waheed Murad
31.
Urdu film
Ek Hi Rasta
from Friday, 3 May 1968
Singer(s): Masood Rana, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): (Playback - title song)
32.
Urdu film
Ek Hi Rasta
from Friday, 3 May 1968
Singer(s): Noorjahan, Masood Rana, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): Rani, Imdad Hussain
33.
Urdu film
Pyar Ki Jeet
from Friday, 19 September 1969
Singer(s): Irene Parveen, Masood Rana, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): ?
34.
Urdu film
Jaltay Arman Bujhtay Deep
from Unreleased
Singer(s): Irene Parveen, Masood Rana, Music: Deebo, Poet: , Actor(s): ?


Film Music Online

Click on any singers image and watch & listen to music videos direct on YouTube..

A. Nayyar
Afshan
Ahmad Rushdi
Akhlaq Ahmad
Alam Lohar
Anwar Rafi
Asad Amanat Ali Khan
Azra Jahan
Basheer Ahmad
Ghulam Abbas
Ghulam Ali
Habib Wali Mohammad
Humaira Channa
Inayat Hussain Bhatti
Iqbal Bano
Irene Parveen
Kousar Parveen
Mala
Masood Rana
Mehdi Hassan
Mehnaz
Mujeeb Alam
Munawar Sultana
Munir Hussain
Naheed Akhtar
Naheed Niazi
Naseebo Lal
Naseem Begum
Nayyara Noor
Nazir Begum
Noorjahan
Nusrat Fateh Ali Khan
Rajab Ali
Runa Laila
Saira Naseem
Saleem Raza
Shoukat Ali
Tasawur Khanum
Zubaida Khanum


مسعودرانا کے 69 ساتھی فنکاروں پر معلوماتی مضامین



Artists database

Useful information's with detailed film records, milestones, videos, images etc..


Click on any category from the menu below and read more information's..



Pakistan Film Database

Detailed informations on released films, music, artists, history,

box office reports, videos, images etc..



7 decades of Pakistani films

Some facts & figures on released films, artists and film music from the last seven decades..

70 Years of Pakistani Films

Movies Online

The largest collection of 1216 Online Pakistani films..

471

Urdu films

633

Punjabi films

90

Pashto films

Libas
Libas
(2013)


PrePartition Film Database

Informations on released films and artists from 1913-47..

PrePartition Film Database (1913-47)


About this site

Pakistan Film Magazine is the first and largest website on Pakistani films, music and artists with detailed informations, videos, images etc. It was launched on May 3, 2000.

Click on the image below and visit the one of the last manual-edited or non-database website from 2012..

Old pages of Pakistan Film Magazine

More archived pages of Pakistan Film Magazine since 2000..


External film & music links



Top


A website by

Pak Magazine