Pakistn Film Magazine in Urdu/Punjabi


Writer, novelist, playwright

Bano Qudsia

Bano Qudsia died on February 4, 2017..
Bano Qudsia - Writer, novelist, playwright - Bano Qudsia died on February 4, 2017..
Facts on Bano Qudsia

Real name Bano Qudsia
Active career
Life 28-11-1928 - 04-02-2017
Born at Ferozpur, Indian Punjab
Language Punjabi
Profession Writer
Relations Ashfaq Ahmad (Husband)

Renowned novelist and playwrighter Bano Qudsia wrote story of Urdu film Dhoop aur Saye in 1968, which was made by her husband and intellectual Ashfaq Ahmad.

Bano Qudsia wrote her first fiction Urdu Afsana Damandgi Shouq in 1950. She wrote many TV dramas and her most famous book was Raja Gidh.

Bano Qudsia passed away on Saturday, February 4, 2016 at Lahore. She was 88 years old.









Sheru
Sheru
(1973)
Qadra
Qadra
(1970)
Izzat
Izzat
(1960)
Qarz
Qarz
(1986)

Talash
Talash
(2019)
Agent 009
Agent 009
(1982)



241 فنکاروں پر معلوماتی مضامین




پاک میگزین کی پرانی ویب سائٹس

"پاک میگزین" پر گزشتہ پچیس برسوں میں مختلف موضوعات پر مستقل اہمیت کی حامل متعدد معلوماتی ویب سائٹس بنائی گئیں جو موبائل سکرین پر پڑھنا مشکل ہے لیکن انھیں موبائل ورژن پر منتقل کرنا بھی آسان نہیں، اس لیے انھیں ڈیسک ٹاپ ورژن کی صورت ہی میں محفوظ کیا گیا ہے۔

پاک میگزین کا تعارف

"پاک میگزین" کا آغاز 1999ء میں ہوا جس کا بنیادی مقصد پاکستان کے بارے میں اہم معلومات اور تاریخی حقائق کو آن لائن محفوظ کرنا ہے۔

Old site mazhar.dk

یہ تاریخ ساز ویب سائٹ، ایک انفرادی کاوش ہے جو 2002ء سے mazhar.dk کی صورت میں مختلف موضوعات پر معلومات کا ایک گلدستہ ثابت ہوئی تھی۔

اس دوران، 2011ء میں میڈیا کے لیے akhbarat.com اور 2016ء میں فلم کے لیے pakfilms.net کی الگ الگ ویب سائٹس بھی بنائی گئیں لیکن 23 مارچ 2017ء کو انھیں موجودہ اور مستقل ڈومین pakmag.net میں ضم کیا گیا جس نے "پاک میگزین" کی شکل اختیار کر لی تھی۔

سالِ رواں یعنی 2024ء کا سال، "پاک میگزین" کی مسلسل آن لائن اشاعت کا 25واں سلور جوبلی سال ہے۔




PAK Magazine is an individual effort to compile and preserve the Pakistan history online.
All external links on this site are only for the informational and educational purposes and therefor, I am not responsible for the content of any external site.