PAK Magazine | An Urdu website on the Pakistan history
Thursday, 13 June 2024, Day: 165, Week: 24

PAK Magazine |  پاک میگزین پر تاریخِ پاکستان ، ایک منفرد انداز میں


پاک میگزین پر تاریخِ پاکستان

Annual
Monthly
Weekly
Daily
Alphabetically

منگل 14 اگست 1973

صدرفضل الہٰی چوہدری

فضل الہیٰ چوہدری
فضل الہٰی چوہدری
پاکستان کے پہلے بے اختیار صدر تھے!

فضل الہٰی چوہدری ، پاکستان کے 5ویں صدرِ مملکت تھے۔۔!

1970ء کے پہلے عام انتخابات میں کامیابی کے بعد 14 اگست 1973ء کو پارلیمانی نظامِ حکومت کے تحت بننے والے پاکستان کے پہلے متفقہ آئین کے نفاذ کے بعد پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں ، "ایوانِ بالا" یعنی سینٹ اور "ایوانِ زیریں" یعنی قومی اسمبلی کے وؤٹوں سے منتخب ہونے والے پہلے صدرِ مملکت تھے۔ انھیں ، صدارتی انتخاب میں نیشنل عوامی پارٹی کے امیدوار ، امیر زادہ خان کے 45 وؤٹوں کے مقابلے میں 139 وؤٹ ملے تھے۔

پہلے بے اختیار صدر

فضل الہٰی چوہدری کا عہدہ صدارت ، "پارلیمانی نظامِ حکومت" میں ایک علامتی اور وفاق کے اتحاد کی علامت تھا جس کے پاس کوئی سیاسی اختیار نہیں تھا۔ اس طرح سے وہ ، پاکستان کے پہلے "بے اختیار" ، صدر تھے جو "صدارتی نظامِ حکومت" کے سکندرمرزا ، ایوب خان ، یحییٰ خان اور بھٹو جیسے طاقتور صدور کے بعد انتہائی کمزور اور بے ضرر صدر ثابت ہوئے جو کچھ لوگوں کی سمجھ سے بالاتر تھا۔ ان کے بارے میں ایک جملہ بڑا مشہور ہوا تھا:
"صدر کو رہا کرو۔۔!"

آئینی مدت پوری کی

فضل الہٰی چوہدری ، پاکستان کے پہلے صدر تھے جنھوں نے نہ صرف اپنی آئینی مدت پوری کی بلکہ اوور ٹائم بھی لگایا تھا۔ وہ ، 16 ستمبر 1978ء تک یعنی 5 سال اور ایک ماہ تک صدر رہے۔ ایک بدترین فوجی آمر کے دور میں بھی ایک سال سے زائد عرصہ تک عہدہ صدارت سے چمٹے رہے حالانکہ انکی سیاسی پارٹی کی بساط لپیٹ دی گئی تھی اور اصولاً انہیں استعفیٰ دے دینا چاہئے تھا لیکن اقتدار کی لذت ہی ایسی ہے یا پنجاب کی سیاسی مٹی ہی ایسی ہے کہ جس نے لیڈر کم اور لوٹے زیادہ پیدا کئے ہیں۔ چوہدری صاحب نے سیاسی وفاداریاں بدلنے میں بھی کمال دکھایا تھا۔

فضل الہٰی چوہدری کا سیاسی کیرئر

1933ء میں گجرات ڈسٹرکٹ بورڈ کے رکن کے طور پر سیاسی کیرئر کا آغاز کیا اور 1944ء میں آل انڈیا مسلم لیگ گجرات کے صدر بن گئے۔ تحریکِ پاکستان میں سرگرم حصہ لیا۔ 1945/46ء کے انتخابات میں اسی پارٹی کے ٹکٹ پر پنجاب اسمبلی کے رکن منتخب ہوئے۔ قیام پاکستان کے بعد پارلیمانی سیکرٹری منتخب ہوئے۔ 1951ء میں اقوامِ متحدہ میں پاکستان کی نمائندگی بھی کی۔ اسی سال پنجاب کے صوبائی انتخابات میں مسلم لیگ کے ٹکٹ پر جیت کر صوبائی وزیر تعلیم اور وزیر صحت رہے۔

1956ء میں ون یونٹ کے تحت بننے والی مغربی پاکستان اسمبلی میں سرکاری پارٹی ، ری پبلیکن پارٹی کے رکن منتخب ہوئے اور ایک متنازعہ فیصلے کے بعد اپنی ہی سابقہ پارٹی مسلم لیگ کے امیدوار کے مقابلے میں سپیکر منتخب ہوئے۔ 1962ء اور 1965ء میں صدر ایوب خان کی سرکاری پارٹی ، کنوینشن مسلم لیگ کے امیدوار کے طور پر قومی اسمبلی کے رکن منتخب ہوئے اور 1965ء سے 1969ء تک قومی اسمبلی کے ڈپٹی سپیکر رہے۔

فضل الہیٰ چوہدری
اسلامی سربراہی کانفرنس (1974) کے موقع پر صدر فضل الہٰی چوہدری ، وزیراعظم ذوالفقار علی بھٹو اور شیخ مجیب الرحمان کے ساتھ

فضل الہٰی چوہدری ، 1970ء کے پہلے عام انتخابات میں پاکستان پیپلز پارٹی کے ٹکٹ پر کھاریاں سے قومی اسمبلی کے رکن منتخب ہوئے۔ 15 اگست 1972ء کو عبوری آئین کے نفاذ کے بعد قومی اسمبلی کے 8ویں سپیکر اور 14 اگست 1973ء کو مستقل آئین کے نفاذ کے بعد صدرِ پاکستان کے منصب پر فائز ہوئے۔

5 جولائی 1977ء کو بھٹو حکومت کے خاتمے کے بعد بھی چودہ ماہ یعنی 16 ستمبر 1978ء تک اپنے عہدے پر برقرار رکھے گئے۔ ان کی مدتِ صدارت 14 اگست 1978ء کو ختم ہوگئی تھی لیکن جاتے جاتے ایک صدارتی آرڈیننس میں چیف مارشل لاء ایڈمنسٹریٹر (یعنی جنرل ضیاع مردود) کو یہ اختیار بھی دے گئے تھے کہ وہ اپنی صوابدید پر کسی کو بھی صدر بنا سکتا ہے۔۔!!!

فضل الہٰی چوہدری کا تعارف

فضل الہٰی چوہدری ، یکم جنوری 1904ء کو تحصیل کھاریاں اور ضلع گجرات کے ایک گاؤں "مرالہ" میں ایک بااثر گجر فیملی میں پیدا ہوئے۔ مقامی طور پر ابتدائی تعلیم حاصل کی۔ 1924ء میں علی گڑھ یونیورسٹی سے انگلش میں MA کرنے کے بعد 1927ء میں پنجاب یونیورسٹی سے وکالت میں LLB کی ڈگری لی۔ گجرات میں پریکٹس کرتے رہے۔ وہ پہلے پنجابی صدر تھے۔ یکم جون 1982ء کو انتقال ہوا۔

سابق صدر فضل الہٰی چوہدری کے پوتے بیرسٹر شہزاد عطا الہٰی ، پاکستان کے اٹارنی جنرل رہے جنھوں نے 26 مارچ 2023ء کو استعفیٰ دے دیا تھا۔






Fazal Ilahi Chaudhry

Tuesday, 14 August 1973

Fazal Ilahi Chaudhry was first elected President of Pakistan..


Fazal Ilahi Chaudhry (video)

Credit: Pak Broad Cor



پاکستان کی تاریخ پر ایک منفرد ویب سائٹ

پاک میگزین ، پاکستان کی سیاسی تاریخ پر ایک منفرد ویب سائٹ ہے جس پر سال بسال اہم ترین تاریخی واقعات کے علاوہ اہم شخصیات پر تاریخی اور مستند معلومات پر مبنی مخصوص صفحات بھی ترتیب دیے گئے ہیں جہاں تحریروتصویر ، گرافک ، نقشہ جات ، ویڈیو ، اعدادوشمار اور دیگر متعلقہ مواد کی صورت میں حقائق کو محفوظ کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔

2017ء میں شروع ہونے والا یہ عظیم الشان سلسلہ، اپنی تکمیل تک جاری و ساری رہے گا، ان شاءاللہ



پاکستان کے اہم تاریخی موضوعات



تاریخِ پاکستان کی اہم ترین شخصیات



تاریخِ پاکستان کے اہم ترین سنگِ میل



پاکستان کی اہم معلومات

Pakistan

چند مفید بیرونی لنکس



پاکستان فلم میگزین

پاک میگزین" کے سب ڈومین کے طور پر "پاکستان فلم میگزین"، پاکستانی فلمی تاریخ، فلموں، فنکاروں اور فلمی گیتوں پر انٹرنیٹ کی تاریخ کی پہلی اور سب سے بڑی ویب سائٹ ہے جو 3 مئی 2000ء سے مسلسل اپ ڈیٹ ہورہی ہے۔


پاکستانی فلموں کے 75 سال …… فلمی ٹائم لائن …… اداکاروں کی ٹائم لائن …… گیتوں کی ٹائم لائن …… پاکستان کی پہلی فلم تیری یاد …… پاکستان کی پہلی پنجابی فلم پھیرے …… پاکستان کی فلمی زبانیں …… تاریخی فلمیں …… لوک فلمیں …… عید کی فلمیں …… جوبلی فلمیں …… پاکستان کے فلم سٹوڈیوز …… سینما گھر …… فلمی ایوارڈز …… بھٹو اور پاکستانی فلمیں …… لاہور کی فلمی تاریخ …… پنجابی فلموں کی تاریخ …… برصغیر کی پہلی پنجابی فلم …… فنکاروں کی تقسیم ……

پاک میگزین کی پرانی ویب سائٹس

"پاک میگزین" پر گزشتہ پچیس برسوں میں مختلف موضوعات پر مستقل اہمیت کی حامل متعدد معلوماتی ویب سائٹس بنائی گئیں جو موبائل سکرین پر پڑھنا مشکل ہے لیکن انھیں موبائل ورژن پر منتقل کرنا بھی آسان نہیں، اس لیے انھیں ڈیسک ٹاپ ورژن کی صورت ہی میں محفوظ کیا گیا ہے۔

پاک میگزین کا تعارف

"پاک میگزین" کا آغاز 1999ء میں ہوا جس کا بنیادی مقصد پاکستان کے بارے میں اہم معلومات اور تاریخی حقائق کو آن لائن محفوظ کرنا ہے۔

Old site mazhar.dk

یہ تاریخ ساز ویب سائٹ، ایک انفرادی کاوش ہے جو 2002ء سے mazhar.dk کی صورت میں مختلف موضوعات پر معلومات کا ایک گلدستہ ثابت ہوئی تھی۔

اس دوران، 2011ء میں میڈیا کے لیے akhbarat.com اور 2016ء میں فلم کے لیے pakfilms.net کی الگ الگ ویب سائٹس بھی بنائی گئیں لیکن 23 مارچ 2017ء کو انھیں موجودہ اور مستقل ڈومین pakmag.net میں ضم کیا گیا جس نے "پاک میگزین" کی شکل اختیار کر لی تھی۔

سالِ رواں یعنی 2024ء کا سال، "پاک میگزین" کی مسلسل آن لائن اشاعت کا 25واں سلور جوبلی سال ہے۔




PAK Magazine is an individual effort to compile and preserve the Pakistan history online.
All external links on this site are only for the informational and educational purposes and therefor, I am not responsible for the content of any external site.