PAK Magazine
Saturday, 03 December 2022, Week: 48

Pakistan Chronological History
Annual
Annual
Monthly
Monthly
Weekly
Weekly
Daily
Daily
Alphabetically
Alphabetically


2018
عارف علوی
عارف علوی
1971
آپریشن سرچ لائٹ
آپریشن سرچ لائٹ
1950
 لیاقت علی خان کا دورہ امریکہ
لیاقت علی خان کا دورہ امریکہ
1957
آئی آئی چندریگر مستعفی
آئی آئی چندریگر مستعفی
1958
جنرل ایوب خان ، صدر بن گئے
جنرل ایوب خان ، صدر بن گئے


1957

Malik Feroz Khan Noon

Monday, 16 December 1957

Malik Feroz Khan Noon was the 7th Prime Minister of Paksitan in just 10 years of independence..!

ملک فیروز خان نون ، وزیر اعظم بنے

سوموار 16 دسمبر 1957
ملک فیروز خان نون
11 دسمبر 1957ء کو ملک فیروز خان نون ، پاکستان کے 7ویں وزیراعظم مقرر ہوئے۔۔!

گیارہ برسوں میں وزارت عظمیٰ کے عہدے پر فائز ہونے والے ملک فیروز خان نون ایک خالص جاگیردار اور انگریز نواز سیاستدان تھے۔ وہ درباری جماعت ری پبلیکن پارٹی کے لیڈر تھے۔ ان کے پاس دفاع و اقتصادی امور ، دولت مشترکہ ، ریاستیں ، سرحدی علاقے ، امور خارجہ کشمیر اور قانون کے محکمے بھی رہے تھے۔ ان کے دس ماہ کے دور حکومت میں 8 ستمبر 1958ء کو گوادر کی پاکستان کو منتقلی ہوئی اور 30 لاکھ ڈالروں کے عوض پاکستان کو 2.400 مربع میل کا علاقہ واپس مل گیا تھا۔ انعام میں صدر پاکستان میجر جنرل سکندر مرزانے 7 اکتوبر 1958ء کو انھیں برطرف کرکے آئین کو معطل کیا ، اسمبلیاں توڑ دیں اور ملک بھر میں مارشل لاء لگا دیا تھا۔

ملک فیروز خان نون کون تھے؟

ملک فیروز خان نون 7 مئی 1893ء کو ضلع سرگودھا کی تحصیل بھلوال کے گاؤں ہموکہ میں پیدا ہوئے۔ وہ سر محمد حیات نون کے صاحبزادے تھے۔ ابتدائی تعلیم پبلک اسکول بھیرہ ضلع سرگودھا سے حاصل کی۔ 1905ء میں ایچی سن کالج لاہور میں داخلہ لیا۔ 1912ء میں اعلیٰ تعلیم کے حصول کے لیے انگلستان چلے گئے۔ 1916 ء میں آکسفورڈ یونیورسٹی سے ایم اے کیا اور بیرسٹر ان لاء کی ڈگری بھی حاصل کی۔ واپسی پر بطور وکیل ڈسٹرکٹ سرگودھا میں پریکٹس شروع کر دی اور 1917ء سے 1926ء تک لاہور ہائی کورٹ میں وکالت کرتے رہے۔

ملک فیروز خان کا سیاسی کیرئر

ملک صاحب نے 1920ء میں سیاست کے میدان میں قدم رکھا اور یونینسٹ پارٹی کے پلیٹ فارم سے پنجاب قانون ساز کے رکن منتخب ہوئے۔ غیر منقسم پنجاب کے وزیراعلیٰ خضر حیات ٹوانہ ان کے کزن بتائے جاتے ہیں۔ 1927ء سے 1936ء تک پنجاب کی کابینہ میں رہے جہاں 1930ء تک صوبائی وزیرِ بلدیات رہے۔ 1931ء سے 1936ء کے دوران سکندر حیات کی کابینہ میں وزیرِ صحت اور وزیر تعلیم رہے۔ 1936ءمیں لندن میں ہندوستان کے ہائی کمشنر مقرر ہوئے۔ 1941ءسے 1942ءتک وہ وائسرائے ہند کی کابینہ کے رکن رہے۔ 1942ءسے 1945ءتک برطانوی ہند کے وزیر دفاع کے منصب پر فائز ہونے والے پہلے ہندوستانی تھے۔ 1945ء میں انھوں نے یونینسٹ پارٹی چھوڑ کر آل انڈیا مسلم لیگ میں شمولیت اختیار کی۔
جب بیگم وقارالنساء کا جوتا نہرو نے پہنوایا
جب بیگم وقارالنساء کا جوتا نہرو نے پہنوایا
اسی دوران 1945 ء میں ملک فیروز خان نون نے ایک آسٹریلین نژاد خاتون وکٹوریہ کو مسلمان کر کے دوسری شادی کر لی اور وہ خاتون بیگم وقارالنسا نون کے نام سے جانی گئی۔ یہ وہی خاتون تھیں کہ جن کا بھارت کے دورہ کے دوران جہاز سے اترتے ہوئے ایک جوتا پھسل گیا تھا اور بھارتی وزیراعظم جواہر لال نہرو نے کمال اعلیٰ ظرفی کا مظاہرہ کرتے ہوئے ان کا جوتا اٹھا کر ان کے پاؤں میں ڈال دیا تھا۔ اس دورے میں بیگم نون ، ایک بھارتی مینا تحفے کے طور پر بھی لائی تھیں۔

قیام پاکستان کے بعد

قیام پاکستان کے بعد ملک فیروز خان نون ، 1947ء سے 1953ءتک پاکستان کی دستور ساز اسمبلی کے رکن رہے۔ اپریل 1950ء تا اکتوبر 1952ء مشرقی پاکستان کے دوسرے گورنر رہے۔ 13 اپریل 1953ء سے 21 مئی 1955ء تک پنجاب کے تیسرے وزیراعلیٰ رہے۔ 1955ء میں مسلم لیگ چھوڑ کر سرکاری جماعت ، ری پبلکن پارٹی میں شامل ہو گئے۔ 12 ستمبر 1956ء کو وزیراعظم پاکستان حسین شہید سہروردی کی کابینہ میں خارجہ امور اور دولت مشترکہ کے محکمے ان کے پاس رہے۔ 18 اکتوبر 1957ء کو وزیراعظم آئی آئی چندریگر کی کابینہ میں ری پبلکن پارٹی کے ٹکٹ پر وزیر امور خارجہ کے عہدہ پر فائز ہوئے ۔ پاکستان کے وزیر اعظم کے منصب پر 7 اکتوبر 1958ء کو برطرفی کے بعد عمر کا بقیہ حصہ گوشہ گمنامی میں گزارا۔ 9 دسمبر 1970ءکو طویل علالت کے بعد لاہور میں وفات پائی۔ وہ متعدد کتابوں کے مصنف بھی تھے۔


1 16-12-1957ملک فیروز خان نونوزیراعظم ، امورخارجہ ، دفاع ، اطلاعات ، بحالیات ، ، دولت مشترکہ امور کشمیر ، اقتصادی ، قانونی اور پارلیمانی امور
2 16-12-1957سید امجد علیوزیر خزانہ



1 16-12-1957Malik Feroz Khan NoonPrime Minister, Foreign, Defence, Law, Kashmir, Info, Commonwealth etc.
2 16-12-1957Syed Amjad AliFinance Minister


2003
پاکستان کا بجٹ 2003/4
پاکستان کا بجٹ 2003/4
1940
قرارداد پاکستان
قرارداد پاکستان
1972
پاکستان ، دولت مشترکہ سے الگ ہوا
پاکستان ، دولت مشترکہ سے الگ ہوا
1948
قائد اعظمؒ  کا انتقال ہوا
قائد اعظمؒ کا انتقال ہوا
2018
عمران خان ، وزیر اعظم بنے
عمران خان ، وزیر اعظم بنے

تاریخ پاکستان

پاک میگزین ، پاکستانی تاریخ پر اردو میں ایک منفرد ویب سائٹ ہے جس پر اہم تاریخی واقعات کو بتاریخ سالانہ ، ماہانہ ، ہفتہ وارانہ ، روزانہ اور حروفانہ ترتیب سے چند کلکس کے نیچے پیش کیا گیا ہے۔ علاوہ ازیں اہم ترین واقعات اور شخصیات پر تاریخی اور مستند معلومات پر مخصوص صفحات ترتیب دیے گئے ہیں جہاں تصویر و تحریر ، ویڈیو اور دیگر متعلقہ مواد کی صورت میں محفوظ کیا گیا ہے۔ یہ سلسلہ ایک انفرادی کاوش اور فارغ اوقات کا بہترین مشغلہ ہے جو اپنی تکمیل تک جاری و ساری رہے گا ، ان شاء اللہ۔۔!



تاریخ پاکستان ، اہم موضوعات
تحریک پاکستان
تحریک پاکستان
جغرافیائی تاریخ
جغرافیائی تاریخ
سقوط ڈھاکہ
سقوط ڈھاکہ
شہ سرخیاں
شہ سرخیاں
سیاسی ڈائری
سیاسی ڈائری
قائد اعظمؒ
قائد اعظمؒ
ذوالفقار علی بھٹوؒ
ذوالفقار علی بھٹوؒ
بے نظیر بھٹو
بے نظیر بھٹو
نواز شریف
نواز شریف
عمران خان
عمران خان
سکندرمرزا
سکندرمرزا
جنرل ایوب
جنرل ایوب
جنرل یحییٰ
جنرل یحییٰ
جنرل ضیاع
جنرل ضیاع
جنرل مشرف
جنرل مشرف
صدر
صدر
وزیر اعظم
وزیر اعظم
آرمی چیف
آرمی چیف
چیف جسٹس
چیف جسٹس
انتخابات
انتخابات
امریکی امداد
امریکی امداد
مغلیہ سلطنت
مغلیہ سلطنت
ڈنمارک
ڈنمارک
اٹلی کا سفر
اٹلی کا سفر
حج بیت اللہ
حج بیت اللہ
سیف الملوک
سیف الملوک
شعر و شاعری
شعر و شاعری
ہیلتھ میگزین
ہیلتھ میگزین
فلم میگزین
فلم میگزین
میڈیا لنکس
میڈیا لنکس

پاکستان کے بارے میں اہم معلومات

Pakistan

چند اہم بیرونی لنکس


پاکستان کی فلمی تاریخ

پاکستانی فلموں ، فنکاروں اور فلمی گیتوں پر ایک منفرد اور معلوماتی سلسلہ

ایم اشرف
ایم اشرف
نسیم بیگم
نسیم بیگم
جعفر بخاری
جعفر بخاری
ایس سلیمان
ایس سلیمان
اکمل
اکمل


PAK Magazine is an individual effort to compile and preserve the Pakistan's political, film and media history.
All external links on this site are only for the informational and educational purposes, and therefor, I am not responsible for the content of any external site.