PAK Magazine | An Urdu website on the Pakistan history
Friday, 12 July 2024, Day: 194, Week: 28

PAK Magazine |  پاک میگزین پر تاریخِ پاکستان ، ایک منفرد انداز میں


پاک میگزین پر تاریخِ پاکستان

Annual
Monthly
Weekly
Daily
Alphabetically

ہفتہ 10 مارچ 1951

1951/54ء کے صوبائی انتخابات

صوبائی انتخابات

پاکستان میں پہلے ملک گیر انتخابات تو 1970ء میں ہوئے تھے لیکن پچاس کی دھائی میں چاروں صوبوں میں ایک ایک بار صوبائی انتخابات بھی کروائے گئے تھے۔۔!

پنجاب کے پہلے صوبائی انتخابات 1951ء

پاکستان میں سب سے پہلے صوبائی انتخابات ، صوبہ پنجاب میں 10 سے 20 مارچ 1951ء کو منعقد ہوئے تھے جن میں حکمران جماعت ، پاکستان مسلم لیگ کو بھاری اکثریت حاصل ہوئی تھی اور 197 میں سے 153 سیٹوں پر کامیابی حاصل کی تھی۔ تقسیم کے وقت سے پنجاب کی حکومت یونیسٹ پارٹی کے پاس تھی اور اتنی مضبوط صوبائی حکومت کے خلاف مسلم لیگ کی یہ "بھاری اکثریت" انتہائی متنازعہ تھی اور دھاندلیوں کے بے شمار الزامات کی وجہ سے ان انتخابات کو "جھرلو الیکشن" کہا جاتا تھا۔ وزیراعظم نوابزادہ لیاقت علی خان کی خواہش پر میاں ممتاز دولتانہ ، وزیراعلیٰ بنے تھے۔

خیبرپختونخواہ کے پہلے صوبائی انتخابات 1951ء

پاکستان میں دوسرے صوبائی انتخابات 8 دسمبر 1951ء کو صوبہ سرحد یا موجودہ خیبرپختونخواہ میں ہوئے تھے۔ یہاں بھی دھاندلیوں کا شور سنا گیا اور حکمران جماعت ، پاکستان مسلم لیگ نے 85 میں سے 67 سیٹیں جیت لی تھیں۔ وزیراعلیٰ خان عبدالقیوم خان کو صوبہ سرحد کا مرد آہن یا "جنرل ڈائر" بھی کہا جاتا تھا جنھوں نے قائداعظمؒ کے حکم پر پاکستان کے قیام کے ایک ہفتہ بعد ہی کانگریس کی حکومت کی برطرفی پر وزارت اعلیٰ کا قلمدان سنبھالا تھا حالانکہ ان کے پاس اسمبلی میں اکثریت نہیں تھی۔ وہ ، اپریل 1953ء تک وزیراعلیٰ سرحد رہے تھے۔

سندھ کے پہلے صوبائی انتخابات 1953ء

پاکستان کے تیسرے صوبائی انتخابات ، صوبہ سندھ میں مئی 1953ء میں ہوئے تھے جن میں وہی صورتحال تھی اور حکمران جماعت ، پاکستان مسلم لیگ نے 111 کے ایوان میں 78 نشستوں پر کامیابی سمیٹی تھی۔ یہ انتخابات گورنر راج کے تحت ہوئے تھے اور مقصد دو بار وزارت اعلیٰ کے منصب پر فائز رہنے والے قوم پرست سندھی رہنما محمدایوب کھوڑو کو اقتدار سے دور رکھنا تھا۔ ان متنازعہ انتخابات میں پیرزادہ عبدالستار ، وزیراعلیٰ بنے تھے۔

مشرقی پاکستان کے پہلے صوبائی انتخابات 1954ء

پاکستان کے چوتھے صوبائی انتخابات ، صوبہ بنگال میں 8 مارچ 1954ء کو ہوئے تھے جو اس وقت تک مشرقی پاکستان یا بعد میں بنگلہ دیش نہیں بنا تھا۔

یہاں صورتحال بالکل مختلف تھی جو بنگالیوں کی الگ سوچ کی عکاس بھی تھی۔ حکمران جماعت ، پاکستان مسلم لیگ کو عبرتناک شکست ہوئی اور 309 کے ایوان میں صرف 10 سیٹیں جیت سکی تھی۔ وزیراعلیٰ نورالامین بھی اپنی سیٹ ہار گئے تھے۔ ان انتخابات میں جگتو فرنٹ یا یونائیٹڈ فرنٹ نے کل 223 نشستیں حاصل کی تھیں۔ یہ چار سیاسی پارٹیوں کا اتحاد تھا جن میں عوامی لیگ ، ڈیموکریٹک پارٹی ، پیپلز کمیٹی پارٹی اور نظام اسلام پارٹیاں شامل تھیں۔اس اتحاد کے سربراہ مولوی فضل الحق ، حسین شہید سہروردی اور مولانا باشانی تھے اور ان کے مطالبات بھی صوبائی خودمختاری کے تھے جو بعد میں شیخ مجیب الرحمان کے بھی بنے اور بنگلہ دیش کی تخلیق کا باعث بنے تھے۔

یاد رہے کہ ان انتخابات کے نتیجہ میں 3 اپریل 1954ء کو مولوی ابولقاسم فضل الحق ، مشرقی پاکستان کے وزیر اعلیٰ بنے لیکن دو ماہ بعد یعنی 30 مئی 1954ء کو گورنر جنرل پاکستان ملک غلام محمد نے ان کی حکومت کر برطرف کر کے گورنر راج نافذ کر دیا تھا۔ مولوی صاحب نے نیویارک ٹائمز کو انٹرویو دیتے ہوئے مشرقی پاکستان کی آزادی کی بات کی تھی جب کہ ڈھاکہ جوٹ ملز میں غیر بنگالیوں کا قتلِ عام بھی ہوا تھا۔

مندرجہ ذیل چارٹ ، ان نتائج پر مبنی ہے جن سے اس وقت کی سیاسی صورتحال اور عوامی سوچ کا اندازہ بھی لگایا جا سکتا ہے۔

پاکستان کے پہلے صوبائی انتخابات 1951/54

پارٹی پنجاب (1951) سندھ (1953) سرحد (1951) بنگال (1954)
کل سیٹیں 197 111 85 309
پاکستان مسلم لیگ 153 78 67 10
جناح عوامی لیگ 32 0 4 0
آزاد پاکستان پارٹی 1 0 0 0
جماعت اسلامی 1 0 0 0
سندھ مسلم لیگ 0 7 0 0
سندھ محاذ 0 7 0 0
جگتو/یونائیٹڈ فرنٹ 0 0 0 223
پاکستان نیشنل کانگریس 0 0 0 24
شیڈول کاسٹ فیڈریشن 0 0 0 27
دی فرنٹ 0 0 0 10
کمیونسٹ پارٹی 0 0 0 4
گندانتری دل 0 0 0 3
بدھسٹ پارٹی 0 0 0 2
کرسچن پارٹی 0 0 0 1
آزاد امیدواران 17 19 13 1
مشرقی پاکستان کے انتخابات میں جگتو فرنٹ یا یونائیٹڈ فرنٹ ، چار سیاسی پارٹیوں کا اتحاد تھا جن میں عوامی لیگ ، ڈیموکریٹک پارٹی ، پیپلز کمیٹی پارٹی اور نظام اسلام پارٹیاں شامل تھیں۔اس اتحاد کے سربراہ مولوی فضل الحق ، حسین شہید سہروردی اور مولانا باشانی تھے اور ان کے مطالبات بھی وہی تھے جو بعد میں شیخ مجیب الرحمان کے تھے۔





First provincial election in Pakistan

Saturday, 10 March 1951

First provincial election was held in Punjab on March 10, 1951..




پاکستان کی تاریخ پر ایک منفرد ویب سائٹ

پاک میگزین ، پاکستان کی سیاسی تاریخ پر ایک منفرد ویب سائٹ ہے جس پر سال بسال اہم ترین تاریخی واقعات کے علاوہ اہم شخصیات پر تاریخی اور مستند معلومات پر مبنی مخصوص صفحات بھی ترتیب دیے گئے ہیں جہاں تحریروتصویر ، گرافک ، نقشہ جات ، ویڈیو ، اعدادوشمار اور دیگر متعلقہ مواد کی صورت میں حقائق کو محفوظ کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔

2017ء میں شروع ہونے والا یہ عظیم الشان سلسلہ، اپنی تکمیل تک جاری و ساری رہے گا، ان شاءاللہ



پاکستان کے اہم تاریخی موضوعات



تاریخِ پاکستان کی اہم ترین شخصیات



تاریخِ پاکستان کے اہم ترین سنگِ میل



پاکستان کی اہم معلومات

Pakistan

چند مفید بیرونی لنکس



پاکستان فلم میگزین

پاک میگزین" کے سب ڈومین کے طور پر "پاکستان فلم میگزین"، پاکستانی فلمی تاریخ، فلموں، فنکاروں اور فلمی گیتوں پر انٹرنیٹ کی تاریخ کی پہلی اور سب سے بڑی ویب سائٹ ہے جو 3 مئی 2000ء سے مسلسل اپ ڈیٹ ہورہی ہے۔


پاکستانی فلموں کے 75 سال …… فلمی ٹائم لائن …… اداکاروں کی ٹائم لائن …… گیتوں کی ٹائم لائن …… پاکستان کی پہلی فلم تیری یاد …… پاکستان کی پہلی پنجابی فلم پھیرے …… پاکستان کی فلمی زبانیں …… تاریخی فلمیں …… لوک فلمیں …… عید کی فلمیں …… جوبلی فلمیں …… پاکستان کے فلم سٹوڈیوز …… سینما گھر …… فلمی ایوارڈز …… بھٹو اور پاکستانی فلمیں …… لاہور کی فلمی تاریخ …… پنجابی فلموں کی تاریخ …… برصغیر کی پہلی پنجابی فلم …… فنکاروں کی تقسیم ……

پاک میگزین کی پرانی ویب سائٹس

"پاک میگزین" پر گزشتہ پچیس برسوں میں مختلف موضوعات پر مستقل اہمیت کی حامل متعدد معلوماتی ویب سائٹس بنائی گئیں جو موبائل سکرین پر پڑھنا مشکل ہے لیکن انھیں موبائل ورژن پر منتقل کرنا بھی آسان نہیں، اس لیے انھیں ڈیسک ٹاپ ورژن کی صورت ہی میں محفوظ کیا گیا ہے۔

پاک میگزین کا تعارف

"پاک میگزین" کا آغاز 1999ء میں ہوا جس کا بنیادی مقصد پاکستان کے بارے میں اہم معلومات اور تاریخی حقائق کو آن لائن محفوظ کرنا ہے۔

Old site mazhar.dk

یہ تاریخ ساز ویب سائٹ، ایک انفرادی کاوش ہے جو 2002ء سے mazhar.dk کی صورت میں مختلف موضوعات پر معلومات کا ایک گلدستہ ثابت ہوئی تھی۔

اس دوران، 2011ء میں میڈیا کے لیے akhbarat.com اور 2016ء میں فلم کے لیے pakfilms.net کی الگ الگ ویب سائٹس بھی بنائی گئیں لیکن 23 مارچ 2017ء کو انھیں موجودہ اور مستقل ڈومین pakmag.net میں ضم کیا گیا جس نے "پاک میگزین" کی شکل اختیار کر لی تھی۔

سالِ رواں یعنی 2024ء کا سال، "پاک میگزین" کی مسلسل آن لائن اشاعت کا 25واں سلور جوبلی سال ہے۔




PAK Magazine is an individual effort to compile and preserve the Pakistan history online.
All external links on this site are only for the informational and educational purposes and therefor, I am not responsible for the content of any external site.