PAK Magazine
Wednesday, 20 October 2021, Week: 42

Pakistan History

سالانہ | ماہانہ | ہفتہ وارانہ | روزانہ | حروفانہ | اہم ترین | تحریک پاکستان | ذاتی ڈائریاں

Pakistan History

2005

جسٹس افتخار محمد چوہدری ، چیف جسٹس بنے

جمعرات 30 جون 2005
عہدہ: چیف جسٹس میعاد: 30 جون 2005ء …… تا …… 9 مارچ 2007ء /20 جولائی …… تا …… 3 نومبر2007ء /22 مارچ 2009 ء …… تا …… 11 نومبر 2013ء ……
پیدائش: کوئٹہ/12 دسمبر 1948ء ……

پاکستان کے بیسویں چیف جسٹس …… افتخارمحمد چوہدری …… تاریخ کے سب سے طاقتور ترین چیف جسٹس رہے ہیں جن کے مداحوں کی اگر ایک بڑی تعداد ہے تو ناقدین بھی کم نہیں ہیں۔ انہوں نے بھی جنرل مشرف سے حلف لیا تھا لیکن جب ان کے بعض فیصلے ناقابل برداشت ہو گئے تھے توان سے استعفیٰ طلب کر لیا گیا تھا جس پر وہ ڈٹ گئے تھے اور پھر پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار ایک آمر کو بھیگی بلی بن کر بھاگنا پڑا۔ عدلیہ کی بحالی کی تحریک کامیاب رہی لیکن اس کا سب سے افسوسناک پہلو یہ رہا کہ اداروں کی بجائے شخصیات کی مضبوطی کا تصور اجاگر ہوا اور چیف جسٹس نے 16 مارچ 2007ء کو اپنے عہدے پر بحالی کے بعد اپنی اس طاقت کا بھر پور مظاہرہ کیا تھا۔ ان کے دور کو …… سوموٹوز …… کے حوالے سے بھی یاد کیا جاتا رہے گا جبکہ NRO کی منسوخی اور وقت کے ایک وزیر اعظم کو توہین عدالت میں برخاست کرنا بھی پاکستان کی تاریخ کا ایک انوکھا واقعہ تھا۔ مبینہ طور پراربوں روپوں کی کرپشن کا مال توواگزار کرایا لیکن چراغ تلے اندھیرا کے مصداق ان کا اپنا بیٹا بدعنوانیوں میں ملوث تھا لیکن وہ کیس دبا دیا گیاتھا جس پر انہیں سخت تنقیدکا سامنا کرنا پڑا تھا۔اس دور کے چند اہم ترین واقعات اس طرح سے ہیں ……

  • جولائی 2005ء میں سپریم کورٹ نے صوبہ سرحد (خیبر پختون خواہ) میں حسبہ بل کو مسترد کر دیا تھا۔
  • جون2006 ء میں سپریم کورٹ نے سٹیل ملز کی نج کاری کا حکومتی فیصلہ کالعدم قرار دے دیا تھا جو عدلیہ بحران کا پیش خیمہ ثابت ہوا تھا۔
  • 9 مارچ 2007ء کو جنرل مشرف نے چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کو مستعفی ہونے کا حکم دے دیا تھا جس کا انہوں نے انکار کر دیا تھا اور ان کی جگہ قائمقام چیف جسٹس کے طورپر …… جسٹس جاوید اقبال اور جسٹس رانا بھگوان داس …… نے فرائض انجام دئے تھے۔ اس دوران ان کی بحالی کے لئے وکلا ء تحریک بھی چل پڑی تھی اور 20 جولائی کو سپریم کورٹ نے …… افتخار محمد چوہدری …… کو بحال کر دیا تھا۔
  • 12 مئی2007ء کے دن وکلا ء کی تحریک کے دوران افتخارمحمد چوہدری کی کراچی آمد پر خون کی ہولی کھیلی گئی تھی۔
  • 3 نومبر 2007ء کو جنرل پرویز مشرف نے چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کو بر طرف کر کے نظر بند کیا اور ملک میں ہنگامی حالات کا نفاذ کر دیا تھا۔ جسٹس عبد الحمید ڈوگر …… کو نیا چیف جسٹس نامزد کیا گیا تھا۔ 31 جولائی 2009ء کو سپریم کورٹ نے اس فیصلے کو غیر قانونی قرار دے دیا تھا۔
  • 22 مارچ 2008ء کو پیپلز پارٹی کے نامزد وزیر اعظم …… یوسف رضا گیلانی …… نے اپنی پہلی تقریر میں …… افتخار محمد چوہدری …… کی نظر بندی ختم کی تھی لیکن بحال اس لئے نہیں کیا تھا کہ اس وقت کے چیف جسٹس …… عبد الحمید ڈوگر …… کی مدت ملازمت پوری نہیں ہوئی تھی۔ اس پر وکلا ء تحریک کا تسلسل جاری رہا۔
  • 18 اگست 2008ء کو پرویز مشرف ، صدارت سے مستعفی ہوئے اور 9 ستمبر کو …… آصف علی زرداری …… نے چیف جسٹس عبد الحمید ڈوگر …… سے نئے صدر کا حلف اٹھایا تھا۔
  • 16 مارچ 2009ء کو وکلا ء تحریک کے لانگ مارچ سے گبھرا کر وزیر اعظم …… یوسف رضا گیلانی …… نے …… افتخار محمد چوہدری …… اور دیگر دس ججوں کی بحالی کا اعلان کر دیا تھا جس پر صدر نے بھی نو ٹیفیکشن جاری کر دیا تھا لیکن وہ اپنے عہدوں پر22 مارچ سے قبل بحال نہیں ہو سکے تھے کہ جب تک …… عبد الحمید ڈوگر …… نے اپنی مدت ملازمت پوری نہیں کر لی تھی ……!
  • 31 جولائی2009ء کو سپریم کورٹ نے جنر ل مشرف کا 3 نومبر 2007ء کاہنگامی حالات کافیصلہ کالعدم قرار دے دیا تھا جس میں جسٹس عبد الحمید ڈوگر کا دور ، فیصلے اور تقرریاں بھی منسوخ کر دی تھیں ……!
  • 26 دسمبر2009ء کو سپریم کورٹ نے ایک اور بڑا فیصلہ دیتے ہوئے NRO کو بھی کالعدم قرار دے دیا تھا جس سے صدر زرداری کے خلاف بد عنوانیوں کے مقدمات دوبارہ کھولنے پر اصرار کیا گیا تھا جبکہ سوئس اکاؤنٹس پر عدلیہ کی بے حد سبکی ہوئی تھی جب یہ پتہ چلا کہ وہ ری اوپن نہیں ہو سکتے۔
  • 16 فروری 2010ء کو پیپلز پارٹی کی حکومت اور عدلیہ کے مابین ججوں کی تعیناتی کے بارے میں اختلافات کو خوش اسلوبی سے حل کر لیا گیا تھا۔
  • 19 جون 2012ء کے دن توہین عدالت کے جرم میں عدالت نے وقت کے وزیر اعظم …… یوسف رضا گیلانی …… کو نااہل قرار دے دیا تھا جبکہ دوسرے وزیر اعظم …… راجہ پرویز مشرف …… کے خلاف رینٹل پاور کیسز کی کاروائی کی اوردسمبر 2013ء میں ان کے صوابدیدی فنڈز کوبھی غیر آئینی قرار دیا گیا۔



Chief Justice Iftikhar Mohammad Chodhaary

Thursday, 30 June 2005





World history
Pakistan Media

Pakistan History

تاریخ پاکستان
محترمہ فاطمہ جناح
محترمہ فاطمہ جناح
پاکستان آرڈیننس فیکٹری
پاکستان آرڈیننس فیکٹری
پاکستان کا پہلا ڈاک ٹکٹ
پاکستان کا پہلا ڈاک ٹکٹ
اسد درانی کا انٹرویو
اسد درانی کا انٹرویو
شیخ مجیب الرحمان کے 6 نکات
شیخ مجیب الرحمان کے 6 نکات

Other segments on Pak Magazine

مستقل سلسلے
اخبارات
اخبارات
جغرافیائی تاریخ
جغرافیائی تاریخ
سقوط ڈھاکہ
سقوط ڈھاکہ
قائد اعظمؒ
قائد اعظمؒ
بھٹو شہیدؒ
بھٹو شہیدؒ
آمر مردود
آمر مردود
صدر
صدر
وزیر اعظم
وزیر اعظم
آرمی چیف
آرمی چیف
چیف جسٹس
چیف جسٹس
مغلیہ سلطنت
مغلیہ سلطنت
ڈنمارک
ڈنمارک
اٹلی کا سفر
اٹلی کا سفر
حج بیت اللہ
حج بیت اللہ
سیف الملوک
سیف الملوک
شعر و شاعری
شعر و شاعری
ہیلتھ میگزین
ہیلتھ میگزین
فلم میگزین
فلم میگزین

Some useful external links


Some useful history sites

World links

Some useful links

Cricket links

IT links

Urdu poetry links

Pakistan
Pakistan

وکی پیڈیا پر پاکستان کی تاریخ


Pakistan World Rankings

پاکستان کی عالمی درجہ بندی

پاکستان کی معیشت ، سیاست و ریاست اور دیگر اہم موضوعات میں عالمی درجہ بندیوں کی معلومات کو اپ ڈیٹ کیا جا رہا ہے۔ روایتی حریف بھارت اور جڑواں بھائی بنگلہ دیش کی درجہ بندیوں کے علاوہ دنیا کی ایک مثالی جمہوریت ڈنمارک کو بھی موازنے کے طور پر شامل کیا گیا ہے۔ درجہ بندیوں میں چھوٹے اعداد بہترین اور بڑے بدترین ہیں جبکہ تمام رقوم امریکی ڈالروں میں ہیں۔
آبادی (لاکھوں میں)225213726170058
آبادی کی درجہ بندی528113
رقبہ33792130
فی کس آمدن12851877188858439
فی کس آمدن کی درجہ بندی1541391427
ڈالر ریٹ16071846
معیشت کا حجم2233051
زرمبادلہ کے ذخائر (اربوں میں)135844378
زرمبادلہ کے ذخائر کی درجہ بندی7154631
خوشحالی123591073
انسانی ترقی15413313110
تعلیم1281121552
صحت عامہ123591073
فوجی طاقت1044554
دہشت گردی سے متاثر783385
امن و امان کی صورتحال1531411015
مذہبی وابستگی50543145
ایمانداری124861461
جمہوری روایات10553767
پاسپورٹ کی عزت107851015


Pakistan Exchange Rates

Pakistan Rupee Exchange Rate