PAK Magazine
Sunday, 27 November 2022, Week: 47

Pakistan Chronological History
Annual
Annual
Monthly
Monthly
Weekly
Weekly
Daily
Daily
Alphabetically
Alphabetically


1954
مسلم لیگ کا مشرقی پاکستان سے صفایا
مسلم لیگ کا مشرقی پاکستان سے صفایا
1991
شوکت خانم  ہسپتال
شوکت خانم ہسپتال
1974
بھٹو کا بنگلہ دیش کو تسلیم کرنا
بھٹو کا بنگلہ دیش کو تسلیم کرنا
1930
نظریہ پاکستان
نظریہ پاکستان
2020
دیامیربھاشا ڈیم کا افتتاح
دیامیربھاشا ڈیم کا افتتاح


1960

Minar-e-Pakistan

Wednesday, 23 March 1960

Minar-e-Pakistan is a national monument to remember The Lahore Resolution from March 1940..

مینار پاکستان

بدھ 23 مارچ 1960
مینار پاکستان
مینار پاکستان

مینار پاکستان ، 1940ء کی قرارداد لاہور کی یاد میں تعمیر کیا گیا تھا۔۔!

22 سے 24 مارچ 1940ء کو لاہور کے منٹو پارک میں بانی پاکستان حضرت قائداعظم محمدعلی جناحؒ کی قیادت میں آل انڈیا مسلم لیگ کا 27واں اجلاس ہوا تھا جس میں "قرارداد لاہور" منظور کی گئی تھی جسے بعد میں "قرارداد پاکستان" کا نام بھی دیا گیا تھا۔ اس قرارداد میں ہندوستان کے مسلمانوں کی آزادی اور خودمختاری کو مسلم لیگ کی سیاسی جدوجہد کا نصب العین قرار دیا گیا تھا۔ عین اسی مقام پر جہاں اس تاریخی اجلاس کا سٹیج سجایا گیا تھا ، ایک یادگار تعمیر کی گئی جسے "مینار پاکستان" یا "یادگار پاکستان" بھی کہا جاتا ہے۔

مرات کا مینار

قیام پاکستان کے بعد ہی لاہور کے تاجروں کا خیال تھا کہ لاہور جیسے تاریخی شہر میں بھی تحریک آزادی کی کوئی یادگار تعمیر ہونی چاہیے۔ اس کے لیے چندے تک اکٹھے کیے گئے لیکن کوئی قابل ذکر پیش رفت نہ ہوسکی۔ انہی تاجروں کے ایما پر لاہور کے کمشنر نے اس کام کو آگے بڑھایا اور ایک روسی نژاد ماہر تعمیرات نصرالدین مرات خان کے ایک نقشے کو منظور کیا گیا۔

سینما اور ریس کے ٹکٹوں سے بنا مینار

گورنر مغربی پاکستان جنرل اخترحسین نے 23 مارچ 1960ء بمطابق 25 رمضان المبارک 1379ء کو اس عظیم یادگار کا افتتاح کیا۔ تعمیر کا ٹھیکہ ، تحریک پاکستان کے ایک کارکن میاں عبدالخالق کو دیا گیا تھا اور گوناگوں مالی مشکلات کی وجہ سے سات سال بعد 26 جولائی 1967ء کو مینار پاکستان کی تعمیر مکمل ہوئی تھی۔ اس پر کل لاگت 75 لاکھ روپے آئی تھی جو 6 فروری 1963ء سے سینما اور گھڑدوڑ کے ٹکٹوں پر بالترتیب 5 اور 50 پیسے کا اضافی ٹیکس لگا کر پوری کی گئی تھی۔

ساختہ پاکستان

مینار پاکستان کا ایک فضائی منظر

مینار کی تعمیر میں استعمال ہونے والا تمام تر سامان پاکستان میں دستیاب تھا۔ سنگ مرمر کے پتھر ، ضلع ہزارہ اور سوات سے منگوائے گئے۔ مینار کی بلندی 196 فٹ یا 70 میٹر ہے۔ 180 فٹ تک مینار کا حصہ لوہے اور کنکریٹ سے بنا ہوا ہے۔ چوٹی پر ساڑھے سولہ فٹ سٹین لیس سٹیل کا گنبد نصب کیا گیا ہے جس سے روشنی منعکس ہو کر ہر سو کرنیں بکھیرتی ہے۔ مینار کی 5 گیلریاں اور 20 منزلیں ہیں۔ پہلی گیلری 30 فٹ اونچائی پر ہے۔ مینار پر چڑھنے کے لیے 334 سیڑھیاں ہیں جبکہ لفٹ کی سہولت بھی موجود ہے۔ پانچویں تختے میں دو ہلالی چاند کے درمیان ستارے کے پانچ کونے ، دین اسلام کے پانچ ارکان کو ظاہر کرتے ہیں۔ اوپر سے دیکھیں تو مینارِ پاکستان کا ڈیزائن ایسا ہے جیسے پھول اپنی پتیاں کھولے ہوئے ہو۔

مینار پاکستان پر خطاطی

مینارِ پاکستان کے نچلے بیرونی حصے پر سنگِ مرمر کی 7 فٹ لمبی اور 2 فٹ چوڑی 19تختیاں نصب ہیں جن پر خط کوفی میں آیات قرآنی ، خط ثلث میں 99 اسمائے حسنہ ، خط نستعلیق میں پاکستان کی آزادی کی مختصر تاریخ ، قومی ترانہ ، قائد اعظم کی تقاریر سے اقتباسات ، علامہ اقبال کی نظم ”خودی کا سرِنہاں لاالہ الااللہ“ اور قراردادِ پاکستان کا مکمل متن اردو ، بنگالی اور انگریزی زبانوں میں کندہ ہیں۔ صدر دوازے پر ”اللہ اکبر“ اور ”مینارِ پاکستان“کی تختیاں آویزاں ہیں۔ یہ خوبصورت خطاطی ، حافظ یوسف سدیدی ، محمد صدیق الماس ، صوفی خورشید عالم ، ابن پروین رقم اور محمد اقبال کی مرہونِ منت ہے۔

ایک تفریحی پارک

مینار پاکستان کے اردگرد 18 ایکڑ رقبے پر محیط خوبصورت اقبال پارک ہے جس میں سبزہ زار ، فوارے ، رہداریاں اور ایک جھیل بھی موجود ہے۔ مینار کے سائے تلے قومی ترانہ کے خالق حفیظ جالندھری آسودہ خاک ہیں۔ پنجاب حکومت نے 2015ء میں اس پارک کو 125 ایکڑ رقبے تک وسعت دیتے ہوئے ایک ارب روپے کی خطیر رقم سے تزئین و آرائش کا آغاز کیا۔ سبزہ زار ، فوارے ، رہداریوں اور جھیل کی توسیع اور مزید خوبصورتی کیساتھ پوئیٹ ریسٹورنٹ اور قومی تاریخی میوزیم کا اضافہ کیا۔ تاریخی عالمگیری مسجد ، شاہی قلعہ اور علامہ اقبالؒ کے مزار کو بھی پارک کی حدود میں شامل کر کے اسے "گریٹر اقبال پارک" کا نام دیدیا گیا جو ایک نئے محکمے "پارک اینڈ ہارٹیکلچرل" کے سپرد کیا گیا ہے۔

مینار پاکستان کا اندرونی منظر






1957
آئی آئی چندریگر مستعفی
آئی آئی چندریگر مستعفی
1966
پہلا ایٹمی بجلی گھر
پہلا ایٹمی بجلی گھر
1947
پاکستان کی پہلی عید
پاکستان کی پہلی عید
2008
سید یوسف رضا گیلانی
سید یوسف رضا گیلانی
1961
صدر ایوب خان کا دورہ امریکہ
صدر ایوب خان کا دورہ امریکہ

تاریخ پاکستان

پاک میگزین ، پاکستانی تاریخ پر اردو میں ایک منفرد ویب سائٹ ہے جس پر اہم تاریخی واقعات کو بتاریخ سالانہ ، ماہانہ ، ہفتہ وارانہ ، روزانہ اور حروفانہ ترتیب سے چند کلکس کے نیچے پیش کیا گیا ہے۔ علاوہ ازیں اہم ترین واقعات اور شخصیات پر تاریخی اور مستند معلومات پر مخصوص صفحات ترتیب دیے گئے ہیں جہاں تصویر و تحریر ، ویڈیو اور دیگر متعلقہ مواد کی صورت میں محفوظ کیا گیا ہے۔ یہ سلسلہ ایک انفرادی کاوش اور فارغ اوقات کا بہترین مشغلہ ہے جو اپنی تکمیل تک جاری و ساری رہے گا ، ان شاء اللہ۔۔!



تاریخ پاکستان ، اہم موضوعات
تحریک پاکستان
تحریک پاکستان
جغرافیائی تاریخ
جغرافیائی تاریخ
سقوط ڈھاکہ
سقوط ڈھاکہ
شہ سرخیاں
شہ سرخیاں
سیاسی ڈائری
سیاسی ڈائری
قائد اعظمؒ
قائد اعظمؒ
ذوالفقار علی بھٹوؒ
ذوالفقار علی بھٹوؒ
بے نظیر بھٹو
بے نظیر بھٹو
نواز شریف
نواز شریف
عمران خان
عمران خان
سکندرمرزا
سکندرمرزا
جنرل ایوب
جنرل ایوب
جنرل یحییٰ
جنرل یحییٰ
جنرل ضیاع
جنرل ضیاع
جنرل مشرف
جنرل مشرف
صدر
صدر
وزیر اعظم
وزیر اعظم
آرمی چیف
آرمی چیف
چیف جسٹس
چیف جسٹس
انتخابات
انتخابات
امریکی امداد
امریکی امداد
مغلیہ سلطنت
مغلیہ سلطنت
ڈنمارک
ڈنمارک
اٹلی کا سفر
اٹلی کا سفر
حج بیت اللہ
حج بیت اللہ
سیف الملوک
سیف الملوک
شعر و شاعری
شعر و شاعری
ہیلتھ میگزین
ہیلتھ میگزین
فلم میگزین
فلم میگزین
میڈیا لنکس
میڈیا لنکس

پاکستان کے بارے میں اہم معلومات

Pakistan

چند اہم بیرونی لنکس


پاکستان کی فلمی تاریخ

پاکستانی فلموں ، فنکاروں اور فلمی گیتوں پر ایک منفرد اور معلوماتی سلسلہ

غلام نبی ، عبداللطیف
غلام نبی ، عبداللطیف
اے شاہ
اے شاہ
شبانہ
شبانہ
شریف نیر
شریف نیر
وحیدمراد
وحیدمراد


PAK Magazine is an individual effort to compile and preserve the Pakistan's political, film and media history.
All external links on this site are only for the informational and educational purposes, and therefor, I am not responsible for the content of any external site.