PAK Magazine | An Urdu website on the Pakistan history
Saturday, 18 May 2024, Day: 139, Week: 20

PAK Magazine |  پاک میگزین پر تاریخِ پاکستان ، ایک منفرد انداز میں


پاک میگزین پر تاریخِ پاکستان

Annual
Monthly
Weekly
Daily
Alphabetically

جمعه 8 جون 1979

بھٹو کی پھانسی اور تارا مسیح

تارا مسیح کا معاوضہ
بھٹو کی پھانسی کا معاوضہ ، دس روپے

8 جون 1979ء کے روزنامہ جنگ میں جلاد تارا مسیح اور دیگر جیل حکام کے انٹرویوز شائع ہوئے جن میں بھٹو کے آخری لمحات کا ذکر کیا تھا۔ ان دنوں افواہوں کا ایک بازار گرم تھا جس میں بھٹو کے پھانسی کی بجائے قتل کی باتیں ہورہی تھیں۔

بھٹو کو پھانسی دینے والے جلاد تارا مسیح نے اس بات کی تردید کی کہ بھٹو کے آخری الفاظ تھے "مالک میری مدد کر، میں بے گناہ ہوں۔" انھوں نے پھانسی تک کوئی بات نہیں کی تھی۔ اس سے قبل ڈیڑھ بجے انھیں جگا کر جب وصیت لکھنے کا کہا گیا تو انھوں نے کہا کہ "وصیت تو کتابوں میں ہوتی ہے۔"

تارا مسیح کے مطابق گیلی زمین ہونے کی وجہ سے بھٹو کو سٹریچر پر پھانسی گھاٹ تک پہنچایا گیا تھا۔ وہ خود چل کر پھندے تک پہنچے اور جب ان کے چہرے پر ماسک ڈالا جاتا تو کہتے "اسے ہٹا دو۔"

بھٹو کو آدھ گھنٹے تک پھندے سے لٹکایا گیا۔ روایت ہے کہ اس دوران فلم بھی بنائی گئی تھی۔ جلاد تارا مسیح کو بھٹو کو پھانسی دینے کا معاوضہ دس روپے ادا کیا گیا تھا۔

مفتی محمود کا مشن

بھٹو کی پھانسی کے بعد دیوبندی جماعت، جمیعت العلمائے اسلام کے سربراہ مولانا مفتی محمود (مولانا فضل الرحمان کے والد) نے سعودی عرب کے شاہ خالد سے ملاقات میں سرکاری موقف بیان کیا جس پر مبینہ طور پر شاہ نے کہا "خدا کا شکر ہے کہ ایک مجرم کو پھانسی دے دی گئی ہے۔"

مولانا مفتی محمود، 1977ء کے انتخابات میں بھٹو مخالف اتحاد، پی این اے (پاکستان قومی اتحاد) کے سربراہ تھے۔ انتخابات میں مبینہ دھاندلیوں کے خلاف تحریک اور پھر "تحریک نظامِ مصطفیٰﷺ" میں بھی اہم کردار کیا۔ بھٹو حکومت کے خاتمے پر انتخابات کے وعدے پر جنرل ضیاع کی سول کابینہ میں بھی شامل ہوئے اور تین وزیر دیے۔ اس دوران بھٹو کی پھانسی پر رائے عامہ ہموار کرتے رہے۔ انتخابات کے انعقاد کی وعدہ خلافی یا آمرمردود کے لیے استعمال ہونے کے بعد دھتکارے جانے پر حکومت سے نکالے گئے اور بھٹو کے دیگر سیاسی مخالفین کی طرح ناکام و نامراد ہی دنیا سے چل بسے۔

8 جون 1979ء کی ذاتی ڈائری کا ایک صفحہ





Bhutto hang

Friday, 8 June 1979

Tara Masih interview about last moments of Mr. Bhutto..




پاکستان کی تاریخ پر ایک منفرد ویب سائٹ

پاک میگزین ، پاکستان کی سیاسی تاریخ پر ایک منفرد ویب سائٹ ہے جس پر سال بسال اہم ترین تاریخی واقعات کے علاوہ اہم شخصیات پر تاریخی اور مستند معلومات پر مبنی مخصوص صفحات بھی ترتیب دیے گئے ہیں جہاں تحریروتصویر ، گرافک ، نقشہ جات ، ویڈیو ، اعدادوشمار اور دیگر متعلقہ مواد کی صورت میں حقائق کو محفوظ کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔

2017ء میں شروع ہونے والا یہ عظیم الشان سلسلہ، اپنی تکمیل تک جاری و ساری رہے گا، ان شاءاللہ



پاکستان کے اہم تاریخی موضوعات



تاریخِ پاکستان کی اہم ترین شخصیات



تاریخِ پاکستان کے اہم ترین سنگِ میل



پاکستان کی اہم معلومات

Pakistan

چند مفید بیرونی لنکس



پاکستان فلم میگزین

پاک میگزین" کے سب ڈومین کے طور پر "پاکستان فلم میگزین"، پاکستانی فلمی تاریخ، فلموں، فنکاروں اور فلمی گیتوں پر انٹرنیٹ کی تاریخ کی پہلی اور سب سے بڑی ویب سائٹ ہے جو 3 مئی 2000ء سے مسلسل اپ ڈیٹ ہورہی ہے۔


پاکستانی فلموں کے 75 سال …… فلمی ٹائم لائن …… اداکاروں کی ٹائم لائن …… گیتوں کی ٹائم لائن …… پاکستان کی پہلی فلم تیری یاد …… پاکستان کی پہلی پنجابی فلم پھیرے …… پاکستان کی فلمی زبانیں …… تاریخی فلمیں …… لوک فلمیں …… عید کی فلمیں …… جوبلی فلمیں …… پاکستان کے فلم سٹوڈیوز …… سینما گھر …… فلمی ایوارڈز …… بھٹو اور پاکستانی فلمیں …… لاہور کی فلمی تاریخ …… پنجابی فلموں کی تاریخ …… برصغیر کی پہلی پنجابی فلم …… فنکاروں کی تقسیم ……

پاک میگزین کی پرانی ویب سائٹس

"پاک میگزین" پر گزشتہ پچیس برسوں میں مختلف موضوعات پر مستقل اہمیت کی حامل متعدد معلوماتی ویب سائٹس بنائی گئیں جو موبائل سکرین پر پڑھنا مشکل ہے لیکن انھیں موبائل ورژن پر منتقل کرنا بھی آسان نہیں، اس لیے انھیں ڈیسک ٹاپ ورژن کی صورت ہی میں محفوظ کیا گیا ہے۔

پاک میگزین کا تعارف

"پاک میگزین" کا آغاز 1999ء میں ہوا جس کا بنیادی مقصد پاکستان کے بارے میں اہم معلومات اور تاریخی حقائق کو آن لائن محفوظ کرنا ہے۔

Old site mazhar.dk

یہ تاریخ ساز ویب سائٹ، ایک انفرادی کاوش ہے جو 2002ء سے mazhar.dk کی صورت میں مختلف موضوعات پر معلومات کا ایک گلدستہ ثابت ہوئی تھی۔

اس دوران، 2011ء میں میڈیا کے لیے akhbarat.com اور 2016ء میں فلم کے لیے pakfilms.net کی الگ الگ ویب سائٹس بھی بنائی گئیں لیکن 23 مارچ 2017ء کو انھیں موجودہ اور مستقل ڈومین pakmag.net میں ضم کیا گیا جس نے "پاک میگزین" کی شکل اختیار کر لی تھی۔

سالِ رواں یعنی 2024ء کا سال، "پاک میگزین" کی مسلسل آن لائن اشاعت کا 25واں سلور جوبلی سال ہے۔




PAK Magazine is an individual effort to compile and preserve the Pakistan history online.
All external links on this site are only for the informational and educational purposes and therefor, I am not responsible for the content of any external site.