PAK Magazine
Saturday, 10 April 2021, Week: 14

Pakistan History

سالانہ | ماہانہ | ہفتہ وارانہ | روزانہ | حروفانہ | اہم ترین | تحریک پاکستان | ذاتی ڈائریاں

Pakistan History

1954

محمد علی بوگرا فارمولا

سوموار 22 نومبر 1954

Mohammad Ali Bogra
پاکستان کے پہلے کٹھ پتلی وزیر اعظم محمد علی بوگرا ، امریکہ میں سفیر تھے اور "چھٹیوں پر" وطن واپس آئے ہوئے تھے کہ انہیں 17 اپریل 1953ء کو بظاہر غیر متوقع طور پر لیکن ایک طے شدہ منصوبہ کے تحت اس وقت کی "خلائی مخلوق" نے وزیر اعظم بنا دیا تھا۔ اس سے قبل دوسرے وزیر اعظم خواجہ ناظم الدین کی حکومت کو برخاست کرنے کا پورا پورا بندوبست بھی کیا گیا تھا جن میں لسانی اور مذہبی فسادات کے علاوہ غذائی بحران بھی پیدا کیا گیا تھا۔ بھوکی قوم کا پیٹ بھرنے کے لئے مستقبل کے ان داتا امریکہ بہادر سے گندم بھی منگوائی گئی تھی جسے اونٹ گاڑیوں پر لاد کر کراچی کی سڑکوں پر گھمایا گیا تھا اور اونٹوں کے گلے میں تختیاں لٹکائی گئی تھیں جن پر "تھینک یو امریکہ" لکھا ہوا تھا۔ اسی سال ستمبر میں آرمی چیف جنرل ایوب خان نے امریکہ کا سرکاری دورہ کیا تھا جس میں روس کے خلاف فوجی معاہدوں کے علاوہ فوجی اور اقتصادی امداد کا ایک بڑا پیکج بھی ساتھ لائے تھے۔ یہ سب انتظام کرنے کے بعد ایک حاضر سروس جنرل کو وزیر دفاع بھی بنا دیا گیا تھا جس سے پاکستان کےمستقبل کا سیاسی خاکہ بھی تیار ہو گیا تھا۔ غریب کی جورو کی طرح مسلم لیگ ہر طالع آزما کی بھابھی بن گئی تھی اور 17 اکتوبر 1953ء کو بوگرا صاحب کو مسلم لیگ کا صدر بھی بنا دیا گیا تھا۔ بنگالیوں کو 7 مئی 1954ء کو بنگالی کو دوسری قومی زبان بنانے کا لالی پاپ بھی دیا گیا تھا لیکن 8 مارچ 1954ء کے صوبائی انتخابات میں مشرقی پاکستان سے مسلم لیگ کا مکمل صفایا ہو گیا تھا۔ 12 اگست 1955ء کو کام مکمل ہونے اور پر پھڑپھڑانے کی ناکام کوشش میں بوگرا صاحب کی چھٹی کروا کر واپس امریکہ میں سفیر کے عہدہ پر پہنچا دیا گیا تھا۔ پرانی خدمات کے عوض 1962/63ء میں انہیں ایوب حکومت نے وزیر خارجہ بھی بنایا تھا اور اسی حیثیت میں 23 جنوری 1963ء کو ان کا انتقال ہو گیا تھا۔ 22 نومبر 1954ء کو ریڈیو پاکستان کی اس نشری تقریر میں وہ جنرل ایوب خان کے ذہن کی اختراع "ون یونٹ" یا جسے تاریخ میں "بوگرا فارمولا" بھی کہا جاتا ہے ، کے قیام کی بھر پور انداز میں وکالت کر رہے ہیں۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ 22 نومبر 1954ء کا یہ "بوگرا فارمولا" اس "بوگرا فارمولا" کا مکمل یوٹرن تھا جو 5 اکتوبر 1953ء کو انہی کی قیادت میں حکمران جماعت مسلم لیگ نے منظور کیا تھا جو کچھ اس طرح سے تھا:

  • وفاقی پارلیمان کے دو ایوان ہوں گے جنہیں مساوی اختیارات حاصل ہوں گے۔
  • ایوان بالا (یا آج کا سینٹ) کے ارکان کی تعداد 50 ہوگی جن میں پانچوں یونٹوں یعنی (1) مشرقی بنگال ، (2) مغربی پنجاب ، (3) سندھ اور ریاست خیرپور ، (4) صوبہ سرحد مع سرحدی ریاستیں اور قبائلی علاقے اور (5) کراچی ، بلوچستان اور ریاست بہاولپور سے دس دس ارکان منتخب ہوں گے۔
  • ایوان زیریں (یا آج کی قومی اسمبلی) 300 ارکان پر مشتمل ہوگی جن میں سے پہلے یونٹ یعنی مشرقی بنگال سے 165 ، دوسرے یونٹ یعنی مغربی پنجاب سے 75 ، تیسرے یونٹ یعنی سندھ اور ریاست خیرپور سے 19 ، چوتھے یونٹ یعنی سرحد ، سرحدی ریاستوں اور قبائلی علاقوں سے 24 اور پانچویں یونٹ یعنی وفاق کے زیرانتظام کراچی ، بلوچستان اور ریاست بہاولپور سے 17 ارکان براہ راست انتخابات سے منتخب ہوں گے۔




Muhammad Ali Bogra

Monday, 22 November 1954

Prime Minister Mohammad Ali Bogra announced his Bogra-Formula on 22 November 1954, which is known as "One Unit Scheme". All parts of now days Pakistan were merged to a single province as West Pakistan and East Bengal was renamed as East Pakistan on 5 October 1955.



Pak Broad Cor



World history
Pakistan Media

BBC Urdu Global websiteDW Urdu Global websiteVOA Urdu Global website Dawn, Karachi NewspaperDunya, Lahore NewspaperJang, Karachi NewspaperKhabrain, Lahore NewspaperPakistan, Lahore NewspaperUmmat, Karachi Newspaper ARY News TVDunya News TVExpress News TVGeo News TVGNN News TVNeo News TVPtv News TV
تاریخ پاکستان
نواز شریف کی جلا وطنی
نواز شریف کی جلا وطنی
صدر ایوب خان کا دورہ امریکہ
صدر ایوب خان کا دورہ امریکہ
پاکستان کا بجٹ 2003/4
پاکستان کا بجٹ 2003/4
جب پاکستان ، بھارت سے بڑی فضائی قوت تھا
جب پاکستان ، بھارت سے بڑی فضائی قوت تھا
نوابزادہ لیاقت علی خان
نوابزادہ لیاقت علی خان

مستقل سلسلے
اخبارات
اخبارات
جغرافیائی تاریخ
جغرافیائی تاریخ
سقوط ڈھاکہ
سقوط ڈھاکہ
قائد اعظمؒ
قائد اعظمؒ
بھٹو شہیدؒ
بھٹو شہیدؒ
آمر مردود
آمر مردود
صدر
صدر
وزیر اعظم
وزیر اعظم
آرمی چیف
آرمی چیف
چیف جسٹس
چیف جسٹس
مغلیہ سلطنت
مغلیہ سلطنت
ڈنمارک
ڈنمارک
اٹلی کا سفر
اٹلی کا سفر
حج بیت اللہ
حج بیت اللہ
سیف الملوک
سیف الملوک
شعر و شاعری
شعر و شاعری
ہیلتھ میگزین
ہیلتھ میگزین
فلم میگزین
فلم میگزین


Some useful history sites

World links

Some useful links

Cricket links

IT links

Urdu poetry links

Pakistan
Pakistan

وکی پیڈیا پر پاکستان کی تاریخ


پاکستان کی عالمی درجہ بندی

پاکستان کی معیشت ، سیاست و ریاست اور دیگر اہم موضوعات میں عالمی درجہ بندیوں کی معلومات کو اپ ڈیٹ کیا جا رہا ہے۔ روایتی حریف بھارت اور جڑواں بھائی بنگلہ دیش کی درجہ بندیوں کے علاوہ دنیا کی ایک مثالی جمہوریت ڈنمارک کو بھی موازنے کے طور پر شامل کیا گیا ہے۔ درجہ بندیوں میں چھوٹے اعداد بہترین اور بڑے بدترین ہیں جبکہ تمام رقوم امریکی ڈالروں میں ہیں۔
آبادی (لاکھوں میں)225213726170058
آبادی کی درجہ بندی528113
رقبہ33792130
فی کس آمدن12851877188858439
فی کس آمدن کی درجہ بندی1541391427
ڈالر ریٹ16071846
معیشت کا حجم2233051
زرمبادلہ کے ذخائر (اربوں میں)135844378
زرمبادلہ کے ذخائر کی درجہ بندی7154631
خوشحالی123591073
انسانی ترقی15413313110
تعلیم1281121552
صحت عامہ123591073
فوجی طاقت1044554
دہشت گردی سے متاثر783385
امن و امان کی صورتحال1531411015
مذہبی وابستگی50543145
ایمانداری124861461
جمہوری روایات10553767
پاسپورٹ کی عزت107851015


Pakistan Rupee Exchange Rate